.

اسرائیل کا غزہ کے شمالی علاقے میں فضائی حملہ

غزہ کی پٹی سے جنوبی اسرائیل کی جانب دو راکٹ فائر کیے جانے کا ردعمل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اسرائیلی فوج نے غزہ کی پٹی کے شمالی علاقے سے دوراکٹ فائر کیے جانے کے بعد وہاں ایک کھلے میدان پر فضائی حملہ کیا ہے۔اس علاقے میں دوماہ سے زیادہ عرصے کے بعد صہیونی فوج کا یہ پہلا حملہ ہے۔

فلسطینی عینی شاہدین نے بتایا ہے کہ اسرائیلی طیارے نے حملے میں غزہ کی پٹی کے شمالی قصبے بیت لاہیا کے مغرب میں علاقے کی حکمراں حماس تحریک کے عسکری ونگ کی ایک تربیتی گاہ کو نشانہ بنایا ہے۔

اسرائیلی فوج نے بھی اس حملے کی تصدیق کی ہے اور کہا ہے کہ جنوبی اسرائیل کی جانب اس علاقے سے راکٹ فائر کیے جانے کے بعد دو راکٹ لانچروں پر یہ فضائی حملہ کیا گیا ہے اور انھیں براہ راست بمباری کا نشانہ بنایا گیا ہے۔فلسطینی ذرائع کے مطابق اس حملے سے فوری طور پر کسی جانی نقصان کی کوئی اطلاع نہیں ہے۔

قبل ازیں اسرائیلی فوج نے ایک بیان میں کہا تھا کہ غزہ کی پٹی سے جنوبی اسرائیل کی جانب دو راکٹ فائر کیے گئے ہیں۔تاہم ان سے کوئی جانی یا مالی نقصان نہیں ہوا تھا۔بیان میں یہ بھی دعویٰ کیا گیا ہے کہ اس راکٹ حملے میں ہاف اشکلان کی علاقائی کونسل کو نشانہ بنانے کی کوشش کی گئی تھی۔

اس حملے سے چندے قبل ہی اسرائیلی حکومت نے مزید چھبیس فلسطینی قیدیوں کی رہائی کی منظوری دی تھی۔انھیں منگل کو اسرائیلی جیلوں سے رہا کیا جائے گا۔امریکا کی ثالثی میں اسرائیل اور فلسطین کے درمیان تین سال کے تعطل کے بعد جولائی میں شروع ہونے والے براہ راست امن مذاکرات کی شرائط کے تحت یہ دوسرا موقع ہے کہ اسرائیل فلسطینی قیدیوں کو رہا کررہا ہے۔