شام کے نائب وزیراعظم ''ڈیوٹی'' سے غیر حاضری پر برطرف

صدراسد نے قدری جمیل کو بغیراجازت ملک سے باہر جانے پرعہدے سے ہٹا دیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

شامی صدر بشارالاسد نے اپنے نائب وزیراعظم قدری جمیل کو مبینہ طور پر ڈیوٹی سے غیر حاضری اور بغیر اجازت ملک سے باہر جانے پر ان کے عہدے سے ہٹا دیا ہے۔

العربیہ ٹی وی نے شامی نائب وزیراعظم کی برطرفی کی اطلاع دی ہے۔شام کے سرکاری میڈیا نے بتایا ہے کہ قدری جمیل حکومت کے علم میں لائے بغیر ملک سے باہر چلے گئے ہیں اور انھوں نے مبینہ طور پر سوئٹزر لینڈ میں امریکی حکام سے ملاقاتیں کی ہیں۔

شام کے سرکاری ٹیلی ویژن کی ویب سائٹ پر پوسٹ کیے گئے بیان کے مطابق:''قدری جمیل کو پیشگی اجازت کے بغیر اپنا کام چھوڑنے اور فرائض ادا نہ کرنے کی بنا پر فارغ کیا گیا ہے۔مزید برآں انھوں نے ملک سے باہر حکومت کے ساتھ کسی قسم کے رابطے کے بغیر سرگرمیاں انجام دی ہیں''۔

قدری جمیل نے ہفتے کے روز شام کے لیے امریکی سفیر رابرٹ فورڈ سے ملاقات کی تھی۔مشرق وسطیٰ سے تعلق رکھنے والے ایک عہدے دار نے اپنی شناخت ظاہر نہ کرنے کی شرط پر بتایا ہے کہ شام کے نائب وزیراعظم نے ماسکو میں روسی حکام سے بات چیت کے بعد فورڈ سے ایک طویل ملاقات کی تھی لیکن یہ نتیجہ خیز نہیں رہی ہے۔

اس عہدے دار کے بہ قول ''قدری جمیل نے جنیوا مذاکرات سے متعلق ایسی تجاویز پیش کی تھیں جنھیں امریکی سفیر پہلے ہی ناقابل عمل تصور کرتے تھے۔وہ جنیوا مذاکرات میں حزب اختلاف کی جانب سے شریک ہونا چاہتے تھے لیکن اس ضمن میں بھی وہ امریکی حمایت کے حصول میں ناکام رہے ہیں''۔

صدر بشارالاسد نے قدری جمیل کو ''محب وطن اپوزیشن'' کا حصہ قراردیا ہے جو ان کے بہ قول حکومت کے تو مخالف ہیں مگر انھوں نے دوسری باغی گروپوں کی طرح شامی فورسز کے خلاف ہتھیار نہیں اٹھائے ہیں۔

واضح رہے کہ امریکا اور روس شامی حکومت اور حزب اختلاف کو ملک میں جاری بحران کے خاتمے کے لیے جنیوا میں مذاکرات کی میز پر لانے کے لیے کوشاں ہیں۔شام کے لیے اقوام متحدہ اورعرب لیگ کے مشترکہ ایلچی لخضرالابراہیمی بھی ان دنوں اس سلسلہ میں خطے کے دورے پرہیں۔

شامی حکومت جنیوا مذاکرات میں شرکت پر آمادگی ظاہر کرچکی ہے جبکہ حزب اختلاف کا کہنا ہے کہ جب تک بشارالاسد اقتدار نہیں چھوڑتے ،اس وقت تک ان کے ساتھ مذاکرات کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا۔شامی فوج کے خلاف برسرپیکار مسلح گروپ تو سرے سے جنیوا مذاکرات میں شرکت کے مخالف ہیں اور انھوں نے وہاں جانے والے شامیوں کو سنگین نتائج کی دھمکی دی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں