سیاسی مفاہمت چاہتے ہیں، اخوان رکاوٹ ہے: عبوری نائب وزیراعظم

امریکی وزیر خارجہ جان کیری آئندہ چند ہفتوں میں قاہرہ آ رہے ہیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

مصر کی عبوری حکومت میں نائب وزیراعظم زاید بہاالدین نے کہا ہے کہ سیاسی مفاہمت کی راہ میں اخوان المسلمون حائل ہے جو حکومتی کوششوں کی حوصلہ شکنی کر رہی ہے۔ زاید بہا الدین نے ان خیالات کا اظہار اپنے ایک بیان میں کیا ہے۔

ان کی طرف سے یہ بیان ایسے وقت میں سامنے آیا ہے جب معزول کیے گئے صدر محمد مرسی اور ان کے ایک درجن سے زائد ساتھی پیر کے روز سے عدالتوں میں مقدمہ ہائے قتل میں پیش ہونے جا رہے ہیں، جبکہ اخوان المسلمون پر پابندی کے بعد اس کے مرشد عام محمد بدیع اور دوسرے اعلی قائدین عدالتوں میں پہلے ہی قتل کے مقدمات بھگت رہے ہیں۔

نائب وزیر اعظم کا کہنا ہے کہ "عبوری حکومت اپنے طور پر مفاہمت کی افادیت اور اہمیت کو تسلیم کرتی ہے ۔''واضح رہے امریکی وزیر خارجہ جان کیری نے رواں ہفتے کے دوران یہ عندیہ دیا ہے کہ وہ مصر کے دورے پر آ رہے ہیں۔

منتخب صدر کی فوج کے ہاتھوں برطرفی اور بعد ازاں سینکڑوں سیاسی کارکنوں کی ہلاکت اور ہزاروں کی گرفتاری کے واقعات کے دوران اعلی سطح کے امریکی دورے غیر علانیہ طور پر معطل رہے ہیں۔ جولائی 2013 کے بعد یہ پہلا موقع ہو گا کہ جان کیری آئندہ ہفتوں قاہرہ آئیں گے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں