شام: کیمیائی ہتھیارسازی کے آلات کی تباہی مکمل

شام کیلیے اب نئے کیمیائی ہتھیار بنانا ممکن نہیں رہا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

شام میں سرگرم عمل اقوام متحدہ کے معائنہ کاروں نے ہفتے کے روز تک حاصل کیے جانے والا ہدف طے شدہ وقت سے پہلے مکمل کرتے ہوئے شام کے ان تمام آلات کو تباہ کر دیا ہے، جو کیمیائی ہتھیاروں کی تیاری میں استعمال ہوتے رہے ہیں یا آئندہ ان کے ایسے استعمال کا خطرہ ہو سکتا تھا۔

اس امر کا اعلان کیمیائی ہتھیاروں کے عالمی واچ ڈاگ نے ایک عالمی خبر رساں ادارے کو فراہم کی گئی دستاویزات میں کیا ہے۔

دستاویز میں کہا گیا ہے کہ'' کیمیائی ہتھیاروں سے نمٹنے والی بین الاقوامی تنظیم اس سلسلے میں تصدیق سے مطمئن ہے اور اس نے ان تمام تباہ کیے گئے آلات کا مشاہدہ کر لیا ہے۔'' ان تباہ شدہ آلات میں وہ تمام آلات شامل ہیں جنہیں شام کی بشار رجیم نے اپنی ظاہر کردہ فہرست میں شامل کیا تھا۔

واضح رہے کیمیائی ہتھیاروں کی پیداوار سے متعلق ان آلات کے خاتمے کی ڈیڈ لائن یکم نومبر مقرر کی گئی تھی، لیکن کیمیائی واچ ڈاگ نے ایک روز قبل ہی یہ ہدف مکمل کرنے کا اعلان کر دیا ہے۔

ان آلات کی تباہی کے بعد اب شام کیلیے کیمیائی ہتھیاروں کی تیاری ممکن نہیں رہی ہے، تاہم ابھی پہلے تیار شدہ شامی کیمائی ہتھیاروں کا خاتمہ نہیں ہو سکا ہے۔

واضح رہے شام کے پاس 1000 ٹن وزن کے کیمیائی ہتھیاروں کی موجودگی کا بتایا جاتا ہے۔ جنہیں تقریبا پچاس مقامات سے 2014 کے وسط تک ختم کیا جانا ہے۔ اس مقصد کیلے ایک سو کی تعداد میں ماہرین سرگرم عمل ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں