.

دمشق کی جنوبی کالونیوں میں کشت و خون نوشتہ دیوار ہے: اپوزیشن

"بشار الاسد حکومت محاذ کے قریب اسلحہ اور لاو لشکر جمع کر رہی ہے"

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

العربیہ ٹی وی کے مطابق شامی اپوزیشن کے اتحاد نے خبردار کیا ہے کہ بشار الاسد کی حامی فوج دمشق کی جنوبی اور مغربی مضافات میں واقع کالونیوں پر غیر معمولی حملے کے لئے پر تول رہے ہیں۔

اپوزیشن اتحاد نے بتایا کہ سرکاری فوج نے حملے کے لئے دسیوں ٹینک اور بڑی تعداد میں فوجی مختلف نوعیت کے بھاری اسلحے سمیت متوقع محاذ کی جانب جمع کرنا شروع کر رکھے ہیں۔ ایک بیان میں اپوزیشن اتحاد کا کہنا تھا کہ سرکاری فوج دمشق کی جنوبی کالونیوں پر زمین سے زمین تک مار کرنے والے میزائل داغنے کے لئے علاقے میں لانچرز بھی منتقل کر رہی ہے۔

شامی اپوزیشن اتحاد نے خدشہ ظاہر کیا ہے کہ محاصرہ زدہ علاقوں میں شہریوں کا بڑے پیمانے پر قتل عام نوشتہ دیوار بنتا جا رہا ہے۔ متوقع حملے کی شکار یہ کالونیاں پہلے ہی ایک برس سے شدید محاصرے کے باعث بنیادی ضرورت کی اشیاء سے محروم چلی آ رہی ہیں۔

شامی حکومت ملک میں جاری بحران کے حل کی خاطر جنیوا ٹو کانفرنس کی صورت میں کی جانے والی سیاسی کوششوں سے پہلے زیادہ جنگی کامیابیاں سمیٹنا چاہتی ہے تاکہ کانفرنس کے نتائج کو اپنے حق میں کیا جا سکے۔

ایک روز قبل سرکاری فوج نے حلب شہر کی نواحی میونسپلٹی السفیرہ پر اپنا کںڑول مستحکم کیا تھا جس کے بعد باغیوں پر مشتمل جیش الحر کے جنگجو علاقہ چھوڑنے پر مجبور ہوئے۔ السفیرہ کا کنٹرول حاصل کرنے سے پہلے بلدیہ پر مسلسل ایک ماہ گولا باری کا سلسلہ بلا توقف جاری رہا۔