.

دمشق اور سویدہ میں بم دھماکے، شامی کرنل سمیت 16 افراد ہلاک

زخمیوں میں خواتین ،بچے اور ریلوے اسٹیشن کی مرمت کا کام کرنے والے ورکر شامل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

شام کے دارالحکومت دمشق اور جنوبی شہر سویدہ میں بم دھماکوں میں آٹھ سکیورٹی اہلکاروں سمیت سولہ افراد ہلاک اور نوّے سے زیادہ زخمی ہوگئے ہیں۔

برطانیہ میں قائم شامی آبزرویٹری برائے انسانی حقوق کی اطلاع کے مطابق سویدہ میں بدھ کو ایک خودکش بمبار نے فضائیہ کے انٹیلی جنس ہیڈکوارٹرز کے سامنے اپنی بارود سے بھری کار کو دھماکے سے اڑا دیا۔اس حملے میں ایک کرنل سمیت آٹھ سکیورٹی اہلکار مارے گئے ہیں۔

شام کی سرکاری خبررساں ایجنسی سانا کی رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ سویدہ میں بم دھماکے میں اکتالیس افراد زخمی ہوئے ہیں لیکن اس نے یہ نہیں بتایا کہ بم دھماکے کا ہدف کیا تھا اور صرف یہ کہا ہے کہ ایک دہشت گرد نے شہر کے ایک چوک میں بم دھماکا کیا ہے۔

اس سے پہلے دارالحکومت دمشق کے وسطی علاقے حجاز میں ایک بم دھماکے میں آٹھ افراد ہلاک اور پچاس زخمی ہوگئے۔سانا نے بتایا کہ دہشت گردوں نے حجاز ریل روڈ کمپنی کے داخلی دروازے پر بم نصب کیا تھا جس کے پھٹنے سے دو خواتین سمیت آٹھ افراد مارے گئے ہیں۔

پچاس زخمیوں میں بچے،خواتین اورٹرین اسٹیشن کی مرمت کا کام کرنے والے ورکر شامل ہیں۔انھیں اسپتال منتقل کردیا گیا ہے۔دمشق میں حالیہ مہینوں کے دوران اس سے پہلے بھی متعدد بم دھماکے ہوچکے ہیں۔شامی حکومت باغی جنگجوؤں پر ان بم دھماکوں کے الزامات عاید کرتی چلی آرہی ہے۔واضح رہے کہ شامی حکومت اور اس کے تحت سرکاری میڈیا باغیوں کو دہشت گرد قراردیتا ہے جبکہ وہ خود کو مزاحمت کار اور حریت پسند قراردیتے ہیں۔