مصر: نئے پارلیمانی انتخابات فروری اور مارچ کے درمیان ہونگے

صدارتی انتخاب موسم گرما کے آغاز میں کرانے کا اعلان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

مصر کی عبوری حکومت نے نئے پارلمانی انتخابات کیلیے امکانی تاریخوں کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ عام انتخابات ماہ فروری اور مارچ کے درمیان آئندہ برس ہوں گے۔

سرکاری اعلان کے مطابق نئے صدر کا انتخاب ان پارلیمانی انتخابات کے بعد اور موسم گرما کے آغاز پر منعقد کرایا جائے گا۔

مصر میں پہلے منتخب صدر محمد مرسی کی تین جولائی کو فوج کے سربراہ جنرل عبدالفتاح کے ہاتھوں برطرفی کے بعد سے قائم کی گئی عبوری حکومت نے اگرچہ عوامی احتجاج کو روکنے کے لیے ملک میں ہنگامی حالت کا نفاذ کردیا تھا، تاہم وہ مسلسل اس کوشش میں رہی ہے کہ آئین میں ترامیم کے بعد نئے انتخابات کا انعقاد کرائے تاکہ کم از کم اخوان المسلموں اور اس ک یحامی جماعتوں اور افراد کا اقتدار میں دوبارہ آنے کا راستہ ایک مرتبہ پھر ہموار نہ ہو۔

اس مقصد کیلے اخوان المسلمون، اس کے سیاسی چہرے حریت و انصاف سمیت سماجی تنظیموں اور عوامی خدمت کے اداروں کو کالعدم کرنے اور اخوان کی قیادت بشمول معزول صدر مرسی کو قتل جیسے مقدمات میں ماخوذ کرنے کے بعد عبوری حکومت نے یہ اعلان کیا ہے۔

اس سے پہلے عبوری حکومت کے بعض ذرائع نے چھ ماہ کے اندر اندر نئے انتخابات کرانے کا عندیہ دیا تھا، تاہم چھ ماہ میں نئے دستور کی تیاری اور سماج میں گہری جڑیں رکھنے والی اخوان کو ٹھکانے لگانا ایک مشکل کام تھا۔

نئے صدارتی انتخابات کا امکان مئی جون میں ہو گا اگرچہ ابھی یہ فیصلہ سامنے نہیں آیا کہ فوج کے سربراہ صدارت امیدوار ہوں گے یا نہیں۔ اسی طرح یہ سوال بھی اہم رہے گا کہ اخوان کے حامی اور جیلوں میں بند ہزاروں سیاسی کارکنوں کی رہائی اس جمہوری مرحلے سے کتنا پہلے ممکن ہو گی ؟ ہو گی بھی یا نہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں