نیتن یاہو کی ایران کیخلاف ٹوئٹر پر مہم

اسرائیلی وزیراعظم نے مہم کو''ایران کا اصل چہرہ'' کا نام دیا ہے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اسرائیلی وزیراعظم بنجمن نیتن یاہو نے ایرانی جوہری پروگرام کے حوالے سے جاری جنیوا مذاکرات کے دوسرے دور کے موقع پر عالمی طاقتوں کو قائل کرنے اور اپنی عوام کو اپنی کوششوں سے مطمئن کرنے کیلیے ایران مخالف مہم کا آغاز کیا ہے۔

یہ مہم ٹوئٹر پر شروع کی گئی ہے تاکہ نیتن یاہو کا پیغام ہر جگہ سرعت کے ساتھ پہنچ جائے۔ اس مہم کو ایران کے حقیقی چہرے کا نام دیا گیا ہے۔

اسرائیلی وزیراعظم نے ٹوئٹر پر ایک تصویر دکھائی ہے، جس میں ایرانی مظاہرین امریکی پرچم نذر آتش کر رہے ہیں، یہ مظاہرین ایران کے مذہبی پیشوا علی خامنہ ای کی تصویر اٹھائے ہوئَے امریکی سفارتخانے پر قبضے کی 34 ویں سالگرہ منا رہے ہیں۔

واضح رہے 1979 میں ایرانی انقلاب کے بعد پاسداران انقلاب نے 444 دن تک مسلسل 52 امریکی سفارتی اہلکاروں کو یرغمال بنائے رکھا تھا۔

اسرائیلی وزیر اعظم نے اپنے ٹوئٹر پیغام میں تصویر پر لکھا ہے'' ایران کا اصل چہرہ۔'' یہ مہم ایک ایسے وقت میں سامنے آئی ہے جب اسرائِیل کے خِال میں امریکا ایران کی چکنی چپڑی سفارتکاری سے متاثر ہو چکا ہے، جس کے نتیجے میں ایران امید رکھتا ہے کہ آج اس کا عالمی طاقتوں کے ساتھ معاہدہ ممکن ہو سکتا ہے۔

یاد رہے ماہ ستمبر کے اواخر سے ماہ اکتوبر کے اواخر سے پہلے تک اسرائیلی وزیر اعظم امریکی صدر اوباما سے اس بارے میں دو ملاقاتیں کر چکے ہیں۔ اسی طرح جان کیری بھی محض دو روز قبل ان سے ملے ہیں لیکن نتائج بظاہراسرائیل کی خواہش کے مطابق نہیں ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں