.

کیمیائی ہتھیار تلفی، ناروے کی نیول فریگیٹ شام جائے گی

ایک مال بردار بحری جہاز بھی ہمراہ ہو گا: وزیر خارجہ ناروے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ناروے کے فوجی ماہرین شام جائیں گے۔ یہ فیصلہ کیمیائی ہتھیاروں کے خاتمے میں عالمی معا ئنہ کاروں کو مدد دینے کیلیے کیا گیا ہے۔

ناروے کے وزیر خارجہ بارج برینڈے نے کہا ہے کہ ان کا ملک شام میں ایک بحری مال بردار جہاز اور ایک نیول فریگیٹ روانہ کرے گا، تاکہ کیمیائی ہتھیاروں کو کسی دوسری جگہ منتقل کیا جا سکے۔

ایک انٹرویو کے دوران نارویجن وزیر خارجہ نے کہا شامی کیمیائی ہتھیاروں کا خاتمہ ناروے کی ذمہ داری ہے۔ انہوں نے تسلیم کیا کہ کیمیائی ہتھیاروں کے خاتمے کی کارروائِی کافی پر خطر کام ہے۔

واضح رہے ایک نارویجن فریگیٹ میں پچاس اہلکار موجود ہوتے ہیں۔ اس سے پہلے ناروے نے اپنے ہاں کیمیائی ہتھیاروں کی تلفی سے یہ کہہ کر معذرت کرلی تھی کہ یہ محدود میں ممکن نہیں ہے۔

وزیر خارجہ کا کہنا ہے '' ابھی اس سلسلے میں تفصیلات کا طے ہونا باقی ہے کہ شام کی بندرگاہوں کو کیمیائی ہتھیاروں کی لوڈنگ کیلیے کیسے استعمال کیا جائے گا۔ جہاں تک فریگیٹ کے شام بھجوانے کا تعلق ہے یہ ان ہتھیاروں کی حفاظت کیلیے مال بردار جہاز کے ساتھ رہے گی جس پر کیمائی ہتھیار منتقل ہوں گے۔

امکان ہے کہ اقوام متحدہ آج جمعہ کے روز کیمیائی ہتھیاروں کی تلفی کے حوالے سے اپنی حکمت عملی کا اعلان کر دے گا تاکہ مارچ 2014 تک تلفی کا کام مکمل کیا جا سکے۔

اس بارے میں بھی فی الحال یہ اعلان ہونا باقی ہے کہ شام کے تباہ کن ہتھیار شام سے دور کس جگہ پر تلف جائیں گے۔ شام کے ایک ہزار ٹن پر مشتمل کیمیائی ہتھیاروں کے بارے میں ماہرین کا خیال ہے کہ انہیں جنگ کی لپیٹ میں ملک کے اندر تباہ کرنا زیادہ خطرناک ہو گا۔