.

روس مصر کو جنگی سامان اور فضائِی نظام دینے کو تیار

مصر کو یہ پیش کش حالیہ اعلی سطح کے دورے موقع پر کی گئی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

روس نے ٘مصر کو جنگی طیاروں اور ہیلی کاپٹرز کی فروخت کی پیشکش کے ساتھ ساتھ ایک مکمل دفاعی نظام کی فراہمی کی پیش کش کی ہے۔ روسی حکام کے مطابق یہ امکانی ڈیل دو ارب ارب ڈالر کی ہوگی۔

روس کی طرف سے عرب دنیا میں اپنے اثرات اور تعلقات بڑھانے کیلیے دوطرفہ فوجی تعاون کی ایک کوشش ہے۔

روسی وزیر خارجہ سرگئی لاروف اور وزیر دفاع شوئغ ونے حالیہ دورہ مصر کے موقع پر مصر کے متعلقہ حکام کو پیش کش کی ہے، تاکہ امریکا کی جانب سے فوجی امداد میں کمی کی وجہ سے مصر کو مشکلات کا سامنا نہ کرنا پڑے۔

روسی وزیر دفاع نے اس پیش کش کی تصدیق کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس تعاون کا ذکر جنرل عبدالفتاح السیسی سے مذاکرات کے دوران کی گیا ہے۔ روسی وزیر دفاع کے مطابق'' ہمارا اس بات پر اتفاق ہوا ہے کہ ہم اس تعاون پر مبنی معاہدے کیلیے قانونی بنیادیں فراہم کریں ۔''

روس ہی کے ایک اور ذمہ دار میخائل ذوالے نے بھی اس امر کی تصدیق کی ہے کہ ''روس مصر کو فوجی ساز و سامان کی فروخت کرنا چاہتا ہے۔'' اس روسی ذمہ دار کا کہنا تھا ''دنیا اب ہمارے پارٹنز کے سا تھ ہے۔''

دریں اثناء ایک روسی روزنامے کا کہنا ہے کہ مصر کے ساتھ مذاکرات جاری ہیں۔ اس جنگی اسلحے کی ادائیگی مصر کے خلیجی اتحادی دوست کر سکتے ہیں۔