.

خود کو گولی مارنے والے اسرائیلی فوجی کو تین ماہ کی چھٹی

فوجی پرخود کو گولی مارنے اورغیرقانونی طور پراسلحہ چلانے پرفرد جرم عاید

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اسرائیل کی ایک فوجی عدالت نے خود کو گولی مارنے والے ایک صہیونی فوجی کو لمبی چھٹی دے دی ہے۔

اسرائیلی میڈیا کی رپورٹس کے مطابق اس فوجی نے تربیت کے دوران خود کو گولی مار لی تھی۔اس پر قسطینہ کی فوجی عدالت میں فرد جرم عاید کی گئی تھی۔

اسرائیلی نیوزویب سائٹ وائی نیٹ نیوز کی رپورٹ کے مطابق اس فوجی پر خود کو گولی مارنے اور اسلحے کے غیر قانونی استعمال کے الزام میں فرد جرم عاید کی گئی ہے۔اسے آیندہ ہفتوں کے دوران عدالت میں پیش کیا جائے گا۔

اس فوجی کو واقعہ کے بعد جنوبی اسرائیل میں واقع ایک اسپتال میں داخل کرادیا گیا تھا جہاں وہ تین روز تک زیرعلاج رہاہے۔اس کے بعد اسے جسمانی اور نفسیاتی صحت کی بحالی کے لیے تین ماہ کی چھٹی پرگھر بھیج دیا گیا ہے۔

واضح رہے کہ اسرائیل میں اس طرح کا پیش آنے والا یہ پہلا واقعہ نہیں ہے۔اس سے پہلے بھی تناؤ کا شکار اسرائیلی فوجی خود کو گولیاں مار کر زخمی کرتے رہے ہیں۔اس طرح کے واقعات میں ملوث فوجیوں کو بالعموم جیل بھیج دیا جاتا ہے لیکن اس فوجی کو جیل کے بجائے چھٹی پر گھر بھیجا گیا ہے۔