.

لیبیا کی انٹیلی جنس کا نائب سربراہ اغوا، ایک افسر ہلاک

ایک ماہ کے دوران تین انٹیلی جنس افسر مارے گئے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

لیبیا کے ایک اور اہم انٹیلی جنس آفیسر جنرل یوسف العتراش ایک واقعے میں ہلاک ہو گئے ہیں۔ ایک ماہ کے دوران لیبیا کے تیسرے انٹیلی جنس آفیسر کو ہلاک کیا گیا ہے۔

جنرل یوسف العتراش لیبیا کے مغربی شہر الاجائلت میں تعینات تھے۔ ان کے قتل کی ابھی تک کسی گروپ نے ذمہ داری قبول نہیں کی ہے۔

اس واقعے کے علاوہ لیبیا کی انٹیلی جنس کے نائب سربراہ مصطفی نوح کو بھی ایک الگ واقعے میں دارالحکومت طرابلس میں اغوا کر لیا گیا ہے۔ اس امر کا اظہار سلامتی سے متعلق ایک ادارے کے ذمہ دار نے عالمی خبر رساں ادارے سے بات چییت کرتے ہوئے کیا ہے۔

حالیہ ایک ہفتے کے دوران طرابلس میں کشیدگی کے واقعات میں مسلسل اضافہ ہوا ہے۔ انٹیلی جنس کے نائب سربراہ مصطفی نوح کو اس وقت اغوا کیا گیا جب وہ غیر ملکی دورے سے واپس وطن پہنچے تھے۔

ایک سابق باغی کمانڈر الابو حفص نے'' العربیہ ''کو بتایا کہ وہ انٹیلی جنس آفیسر مصطفی نوح کے ساتھ ایک کار میں ائیر پورٹ سے روانہ ہوا تھا کہ اسی دوران انٹیلی جنس کے نائب سربراہ کو مسلح افرادنے اغواء کر لیا۔

لیبیا کی کمزور حکومت دو سال گذرنے کے بعد بھی سابقہ باغی گروپوں پر کنٹرول پانے میں ناکام ہے۔ انہی مسلح افراد کے ہاتھوں ماہ اکتوبر میں وزیر اعظم علی زیدان کو بھی کئی گھنٹوں کیلیے اٹھا لیا گیا تھا۔