.

شام: بشارالاسد کو قابل قبول جماعت کے حکومت مخالف رہ نما گرفتار

این سی سی ڈی سی کے سربراہ اور گرفتار لیڈر جنیوا روانہ ہونے والے تھے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

شامی حکام نے صدر بشارالاسد کی حکومت کے لیے قابل قبول حزب مخالف کی جماعت قومی رابطہ کمیٹی برائے جمہوری تبدیلی (این سی سی ڈی سی) کے ایک سرکردہ رہ نما کو گرفتار کر لیا ہے۔

این سی سی ڈی سی کے چئیرمین حسن عبدالاعظم نے جمعرات کو میڈیا کے نمائندوں کو بتایا ہے کہ رجاء ناصر کو دارالحکومت دمشق کے علاقے البرامکہ سے سکیورٹی اہلکاروں نے بدھ کو گرفتار کیا تھا لیکن وہ ان کی گرفتاری کے سبب کے بارے میں کچھ نہیں جانتے۔

البتہ انھوں نے بتایا کہ وہ اور رجاء ناصر روسی وزیرخارجہ سرگئی لاروف سے ملاقات کے لیے جنیوا جانے کی تیاری کررہے تھے اور انھیں دمشق میں روسی سفیر نے وزیرخارجہ لاروف سے 26 نومبر کو جنیوا میں ملاقات کی دعوت دی تھی۔

شامی حکومت نے این سی سی ڈی سی کے ایک کارکن عبدالعزیز خیر کو ستمبر 2012ء سے حراست میں لے رکھا ہے۔

واضح رہے کہ روس امریکا کے ساتھ مل کرشام میں جاری بحران کے خاتمے جنیوا میں دوسری امن کانفرنس کے انعقاد کی کوششیں کررہا ہے اور اس سلسلے میں روسی عہدے دار شامی حکومت اور حزب اختلاف کے نمائندوں سے ملاقاتیں کررہے ہیں اور انھیں جنیوا میں مجوزہ امن مذاکرات میں شرکت پر آمادہ کرنے کی کوشش کررہے ہیں۔تاہم ابھی اس مجوزہ کانفرنس کی کوئی تاریخ مقرر نہیں کی گئی ہے۔