.

امریکا کا میزائل برادر چار جنگی بحری جہاز مصر کو فراہم کرنے کا فیصلہ

مصری نیول حکام کی امریکا میں تربیت بھی جاری ہے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکی ذرائع ابلاغ نےاطلاع دی ہے کہ محکمہ دفاع پینٹاگان نے چار میزائل بردار بحری جنگی جہاز مصر کے حوالے کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ ان میں سے ایک بحری جہاز گذشتہ روز قاہرہ کے نیول حکام کے حوالے کر دیا گیا ہے جبکہ بقیہ چار جہاز پیش آئند مہینوں میں مصری نیوی کے سپرد کیے جائیں گے۔

امریکی محکمہ دفاع کی مقرب نیوز ویب پورٹل "ڈیفنس نیوز" کی رپورٹ کے مطابق حال ہی میں ریاست فلوریڈا کے شہر پینساکولا میں ایک تقریب میں مصر کے لیے"ایس عزت" اور "ایمپاسا ڈور 3" طرز کے میزائل بردار بحری جہاز مصر کو دینے کا اعلان کیا گیا۔

رپورٹ کے مطابق امریکا کی جانب سے بحری جنگی کشیتاں رواں سال مصر کو دینے کا فیصلہ کیا گیا تھا تاہم مصری نیول حکام کی تربیت کے لیے کچھ عرصہ مزید درکار تھا۔ اس دوران مصری نیوی کے اہلکاروں کو" پینساکولا" کے فوجی اڈے پر ان جنگی جہازوں کے استعمال کی باعدہ تربیت دی گئی۔

مصر کے حکومتی ترجمان کی حیثیت سے شہرت پانے والے اخبار الاھرام کی رپورٹ کے مطابق دوسرا میزائل برادر بحری جہاز زیڈ فکری دسمبر میں قاہرہ کے حوالے کیا جائے گا۔

دومزید بحری جنگی جہازوں"آئی جیڈ" اور "ایم فہمی" " امریکا میں" ہیلٹر میرینز میں تیاری کے آخری مراحل میں ہیں جنہیں آئندہ سال قاہرہ کے حوالے کیے جانے کے امکانات ہیں۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق امریکا کی جانب سے مصر کو فراہم کینے جانے والے "ڈسٹرائر" کی لمبائی 26 میٹراور وزن 700 ٹن ہے۔ تین ڈیزل انجن کے ساتھ حرکت میں آنے والا یہ جنگی جہاز زمین سے زمین پرمار کرنے والے میزائلوں کے آٹھ لانچنگ پیڈ، 76 ملی میٹر دھانے والی ایک توپ، مکمل دفاعی نظام سے لیس ہے اور آٹھ دن تک سمندر میں مسلسل سفر کی صلاحیت رکھتا ہے۔