لبنان: صدر نے حزب اللہ کو سلامتی کیلیے خطرہ قرار دیدیا

شام کی خانہ جنگی سے فوری الگ ہو جائیں: مائیکل سلیمان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

لبنان کے صدر مائیکل سلیمان نے ملک میں آزادانہ روش کے حامل گروپوں بشمول شیعہ ملیشیا حزب اللہ کو قومی سلامتی کیلیے خطرہ قرار دیا ہے۔ وہ ملک کے 70 ویں یوم آزادی کے حوالے سے منعقدہ تقریب سے خطاب کر رہے تھے۔

صدر مائیکل سلیمان نے حزب اللہ کی ملک سے باہر مسلسل جاری سرگرمیوں پر اور غیر ملکی کنٹرول میں رہ کر شام کی خانہ جنگی کا حصہ بننے پر بھی تنقید کی۔

لبنانی صدر کا کہنا تھا '' ایک ریاست اپنے استحکام کو برقرار نہیں رکھ سکتی اگر مختلف جماعتیں اور گروہ اس منظق سے دور رہیں جو ریاست کے لیے ضروری ہے، یا ایسے گروپ قومی اتفاق رائے کے بغیر اپنے طور پر سرحد پار جا کر مسلح تصادم کا حصہ بن جائیں ، تو یہ گروپ قومی اتحاد اور سماجی امن کیلیے خطرہ بن جاتے ہیں۔''

دوسری جانب حزب اللہ کا کہنا ہے کہ وہ شیعوں کے تحفظ کیلیے بشارالاسد کی مدد کر رہی ہے، حزب اللہ کے سربراہ حسن نصراللہ نے اسی ماہ کہا ہے کہ '' ہمارے لوگ اسرائیلی سازش کا مقابلہ کرنے کیلیے شام میں موجود رہیں گے۔'' جبکہ صدر نے شام کی خانہ جنگی سے فوری طور پر الگ ہونے کی اپیل کی ہے۔

صدر مائیکل سلیمان نے حزب اللہ کا نام لیے بغیر کہا'' لبنانی فوج کو مسلح گروپوں کی طرف سے ملک اندر اسلحے کے استعمال پر کنٹرول پانا چاہیے۔''

مقبول خبریں اہم خبریں