حسنی مبارک کو بیٹوں سمیت کرپشن کے نئے مقدمے کا سامنا

18 ملین ڈالر کے سرکاری وسائل ذاتی جائیداد کیلیے خرچ کیے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

طویل عرصے تک مصر کے مطلق العنان حکمران رہنے والے سابق صدر حسنی مبارک اور ان کے بیٹوں کو ملکی وسائل سے ذاتی جائیداد بنانے کے جرم میں ایک نئے مقدمے کا سامنا کرنا ہو گا۔

سابق صدر مبارک اور ان کے دونوں بیٹوں اعلی اور جمال پر الزام ہے کہ انہوں نے 18 ٘ملین امریکی ڈالر کے قومی وسائل ذاتی جائیداد بنانے پر خرچ کیے۔ یہ خطیر رقم وزارت ہاوسنگ کے ذریعے نجی جائیداد خریدنے پر خرچ کی گئی تھی۔

کرپشن کے اس مقدمے میں چار دیگر افراد کو بھی ملزم ٹھہرایا گیا ہے، تاہم مصر کے سرکاری ذرائع کا کہنا ہے کہ اس مقدمے کی سماعت کب شروع ہو گی اس بارے میں ابھی تاریخ طے نہیں کی گئی ہے۔

واضح رہے حسنی مبارک پہلے ہی 2011 کی مزاحمتی تحریک کے دنوں میں جاں بحق ہونے والے مظاہرین کے قتل کے مقدمے کا سامنا کر رہے ہیں۔ ان مقدمات میں ان کے ساتھ اس دور کی وزارت داخلہ کے اعلی حکام بھی شریک ملزمان کے طور پر موجود ہیں جبکہ حسنی مبارک کے بیٹوں پر کرپشن کے بعض دیگر مقدمات بھی چل رہے ہیں، تاہم ابھی کسی مقدمے کا فیصلہ نہیں ہو سکا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں