.

جی سی سی 'گلف انٹر پول' اور ایمرجنسی کٹرول روم کے قیام پر متفق

"عالمی طاقتیں ایران کے جوہری پروگرام پر ڈیل کی وضاحت کریں"

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

خلیجی ریاست بحرین میں خلیج تعاون کونسل"جی سی سی" کے وزراء داخلہ کے اجلاس میں تنظیم کے رکن ملکوں کو درپیش مشترکہ سیکیورٹی چیلنجز سےنٹمنے کے لیے مشترکہ پولیس فورس"گلف انٹرپول" کے قیام پراتفاق کر لیا گیا ہے۔

منامہ میں منعقد ہونے والے "جی سی سی" وزرائے داخلہ اجلاس کے اختتام پر ایک اعلامیہ جاری کیا گیا جس میں عالمی طاقتوں سے کہا گیا ہے کہ وہ ایران کے ساتھ طے پائے جوہری معاہدے کی وضاحت کریں اور یہ بتائیں کہ تہران کا جوہری پروگرام خلیجی ممالک کی سلامتی کے لیے کہیں خطرہ تو نہیں ہے۔

اجلاس کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے بحرینی وزیر داخلہ کا کہنا تھا کہ میٹنگ کے دوران وزراء داخلہ نے خلیج میں لبنانی شیعہ ملیشیا حزب اللہ کے مفادات کےخلاف موثر حکمت عملی بنانے پربھی اتفاق کیا گیا ہے۔

خلیج تعاون کونسل کے سیکرٹری جنرل عبدالطیف الزیانی نے بتایا کہ تمام ممبرممالک مشترکہ سیکیورٹی چیلنجز سے نمٹنے کے لیے "جوائنٹ پولیس فورس" کے قیام کے فارمولے پرمتفق ہیں۔ اس کے علاوہ جی سی سی اجلاس میں ہنگامی حالات اور بحرانوں سے نمٹنے کے لیے ایک "ایمرجنسی کنٹرول روم" بنانے پربھی اتفاق کیا گیا ہے۔

خیال رہے کہ "جی سی سی" کے بتیسویں وزرائے داخلہ اجلاس کا اہم ایجنڈا "گلف انٹرپول" کی تجویز پراتفاق رائے پیدا کرنا، کویت میں ایمرجنسی کنٹرول روم کے قیام سے متعلق تجاویز کوعملی جامہ پہنانا اور ایران کے ساتھ عالمی طاقتوں کی ڈیل پر تحفظ کی ضمانتیں فراہم کرنے کا مطالبہ کرنا تھا۔