.

"جامع دمشق" پر راکٹ حملے میں چار افراد ہلاک، 26 زخمی

شامی حکومت کی باغیوں کے راکٹ حملوں کی اقوام متحدہ میں شکایت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

شام کے دارالحکومت دمشق کے وسط میں واقع تاریخی جامع مسجد اموی پر نامعلوم افراد کی جانب سے داغے گئے راکٹ حملے میں کم سے کم چار افراد ہلاک اور چھبیس زخمی ہو گئے ہیں۔

شام کے سرکاری ٹیلی ویژن پرنشرکردہ ایک ویڈیو فوٹیج بھی دکھائی گئی ہے جس میں دکھایا گیا ہے کہ راکٹ حملے میں مسجد کوبھی نقصان پہنچا ہے۔ ٹی وی رپورٹ کے مطابق "دہشت گردوں نے جامع دمشق پر "ھاون" راکٹوں سے حملہ کیا ہے جس کے نتیجے میں چار نمازی جاں بحق اور دو درجن سے زائد زخمی ہو گئے۔

خیال رہے کہ جامع دمشق پرراکٹ حملہ ایک ایسے وقت میں ہوا ہے جب دمشق کے مضافاتی علاقے قلمون میں سرکاری فوج نے باغیوں کو ایک مرتبہ پھر پسپا کردیا ہے۔ قلمون کے علاقے میں ایک ماہ سے خونریز جھڑپیں جاری تھیں جہاں نومبر کے وسط میں باغیوں نے شہرکے اہم مقامات پراپنا کنٹرول حاصل کرلیا تھا۔ شام کا لبنان سے متصل قلمون کا علاقہ تزویراتی اعتبار سے نہایت اہمیت کا حامل سمجھا جاتا ہے۔

حال ہی میں شامی حکومت نے اقوام متحدہ کو تحریر کردہ ایک مراسلے میں باغیوں کے دمشق میں راکٹ حملوں کی شکایت کی تھی۔ مراسلےمیں کہا گیا ہے کہ شامی باغی نہتے شہریوں کے قتل عام میں ملوث ہونے کے ساتھ ساتھ مساجد اور مقدس مقامات کو منظم سازش کے تحت نشانہ بنا رہے ہیں۔