.

شامی کیمیائِی ہتھیاروں کی تلفی، امریکی بحری جہاز کی تیاری

35 نجی کمپنیوں نے بھی خدمات کیلیے دلچسپی ظاہر کی ہے، عالمی ادارہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکی حکومت نے شام کے کیمیائی ہتھیاروں کی سمندر میں تلفی کیلیے اپنے ''ایم وی کیپ رے '' نامی بحری جہاز میں ضروری آلات لگا کر تیاری شروع کر دی ہے۔

میری ٹائم انتظامیہ نے '' کیپ رے '' کی اس اہم اسائینمنٹ کیلیے تیاری اس امکان کے پیش نظر شروع کی ہے کہ آئندہ دنوں اس مقصد کیلیے بحری جہاز کی ضرورت پڑ سکتی ہے۔ اس مقصد کیلیے جہاز کو نئے ڈویلپ کیے گئے ''فیلڈ ڈیپلائے ایبل ہائیڈرالیسس سسٹم '' سے لیس کیا جا رہا ہے۔

امریکی ذرائع نے شناخت سامنے نہ لانے کی شرط پر بتایا امریکی محکمہ دفاع نے یہ سسٹم کیمیائی ہتھیاروں کی تلفی کیلیے بطور خاص تیار کیا ہے۔

امریکا کی نیشنل سکیورٹی کونسل کے امور کیلیے وائٹ ہاوس کی ترجمان کیٹلین ہائیڈن کا اس بارے میں کہنا ہے '' امریکا نے پیش کش کر رکھی ہے اور بین الاقوامی برادری کے ساتھ مل کر کیمیائی ہتھیاروں کی محفوظ ترین طریقے سے تلفی کا تہیہ کیے ہوئے ہے۔''

ترجمان نے مزید کہا ہم نے اس مقصد کیلیے ہائیڈرالسس سسٹم او پی سی ڈبلیو کی مدد کیلیے اسے دینے کی پیش کش کی ہے ، ہمیں یقین ہے کہ ہم کیمیائی ہتھیاروں کی تلفی کیلیے ایک سنگ ایک راستہ متعین کرنے کا ذریعہ بن سکتے ہیں ۔''

امریکی کیپ رے 198 لمبائی کا حامل ہے جس میں کارگو کی جدید سہولیات بھی فراہم ہیں۔ یہ جہاز میری ٹائم ایڈمنسٹریشن میں ریزرو میں موجود 46 جہازوں کا حصہ ہے۔

شامی کیمیائی ہتھیاروں کی تلفی کے لیے اس آپریشن انتہائی خطرناک ہے۔ اس مقصد کیلے ان ہتھیاروں 31 دسمبر 2013 تک شام سے باہر لے جانا ہو گا۔ جبکہ تام کیمیائی ہتھیروں کی تلفی اگلے سال30 جون تک مکمل کی جانا ہے۔

کیمیائی ہتھیاروں سے متعلق عالمی ادارے کے مطاق 35 نجی کمپنیاں ان ہتھیاروں کی تلفی کا ٹھیکہ لینے میں اپنی دلچسپی ظاہر کر چکی ہیں۔ تاہم نجی کمپنیوں نے زیادہ تر دلچسپی کم اہم اور کم حساس ہتھیاروں کی تباہی کیلیے خدمات پیش کرنے کا کہا ہے۔