.

ایرانی وزیر خارجہ بدھ کے روز متحدہ عرب امارات جائینگے

اومان، کویت اور قطر کا دورہ مکمل، اگلے مرحلے پر عراق کی تیاری

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ایرانی وزیر خارجہ جوہری معاہدے کے بارے میں عرب ملکوں کو اعتماد میں لینے کے سلسلے میں آج متحدہ عرب امارات کے دورے پر دبئی جائیں گے۔ اس امر کا اعلان جواد ظریف نے اپنے فیس بک پیج کے ذریعے کیا ہے۔

اس سے پہلے ایرانی وزیر خارجہ جواد ظریف کویت، اومان اور قطر کا دورہ کر چکے ہیں جبکہ انہوں نےخطے میں بہتری کے لیے سعودی عرب کے ساتھ ملکر کام کرنے کا عندیہ بھی دیا ہے۔

جواد ظریف نے اپنے فیس بک پیج پر کہا ہے کہ '' میں آج امارات کے دورے پر جاوں گا، جہاں دبئی اور ابوظہبی میں اعلی سطح کی ملاقاتیں ہوں گی۔''

خلیجی ریاستوں کو بعض مغربی ممالک کی طرح خوف ہے کہ ایران بتدریج جوہری بم بنانے میں کامیاب ہو سکتا ہے۔

اس دورے کے موقع پر جواد ظریف جزیرہ ابو موسی سمیت دوسرے دو جزیروں پر بھی تبادلہ خیالہ کا امکان رد نہیں کا جاتا ہے۔ مذکورہ تینوں جزیرے متحدہ عرب امرات کے جنوب میں ہیں تاہم ایرانی قبضے میں ہیں۔

متحدہ امارات کا ان تین جزیروں کے بارے میں دعوی ہے کہ اس کی ملکیت ہیں۔ ایرانی وزیر خارجہ جواد ظریف کے ترجمان نے وزیر خارجہ جواد کے سعودی دورے کے حوالے کہنا ہے کہ '' شام کے معاملے سمیت کئی ایشوز پر تبادلہ خیال کیا جائے گا۔

متحدہ عرب امارات کے دورے سے واپسی پر جواد ظریف عراق جائیں گے۔ جہاں ان ک وزیر اعظم نورالمالکی سے بھی ملاقات ہو گی۔