ایران: تیل کی رکی برآمدات کی بحالی کیلیے تیاریاں تیز

چالیس لاکھ بیرل تیل یومیہ برآمد کرینگے: وزیر تیل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ایران میں اقتصادی پابندیوں میں نرمی کے ساتھ ہی بڑی مقدار میں خام شکل میں تیل برآمد کرنے کی تیاریاں تیز کر دی گئی ہیں۔ ایرانی وزیر تیل کا اس حوالے سے کہنا ہے کہ'' ہم فوری طور پر اس پوزیشن میں آ جائیں گے کہ روزانہ چار ملین بیرل تیل برآمد کر سکیں، اس سلسلے میں کوئی تکنیکی مسئلہ ہو گا نہ سیاسی رکاوٹ کہ ایک دن میں چالیس لاکھ بیرل تیل برآمد کرنے میں مشکل محسوس کریں۔''

ایرانی حکومت جوہری پروگرام پر ابتدائی معاہدے کے بعد پوری یکسوئی سے اپنی برآمدات کی راہ میں حائل ممکنہ رکاوٹوں کو دور کرنے کیلیے کوشاں ہے۔ وزیر خارجہ جواد ظریف بیرونی محاذ پر فعال ہیں اور ان دنوں عرب ملکوں کے دورے پر ہیں۔ آج بدھ کے روز انہیں متحدہ عرب امارات پہنچنا ہے جہاں وہ خیر سگالی کا پیغام لا رہے ہیں۔

اس صورت حال میں ایرانی وزارت تیل اور برا٘مدات سے متعلق دوسرے شعبے دن رات ایک کیے ہوئے ہیں۔ وزیر تیل بائیجان زنگاناہے کا کہنا ہے '' ہم سمجھتے ہیں یہ ہمارا حق ہے کہ ہم اپنی برآمدات میں اضافہ کریں۔''

ماہ نومبر میں جنیوا میں طے پانے والے ابتدائی جوہری معاہدے کے تحت ایران کو چھ ماہ کے اندر اپنی ذمہ داریاں پوری کرنا ہوں گی تاکہ باضابطہ جوہری معاہدے کی راہ ہموار ہو اور عالمی طاقتیں ایران کے بارے میں یہ یقین کر سکیں کہ اب یہ جوہری بم بنانے کی پوزیشن میں نہیں ہے۔

اس ابتدائی معاہدے کے نتیجے میں ایران کو بھی پابندیوں سے قدرے ریلیف مل جانے سے اس کے منجمد شدہ بنک اکاونٹس اور تیل کی برآمدات بحال ہو جائیں گی، تاہم ابتدائی معاہدے پر عمل نہ کرنے کی صورت میں ایران کیخلاف زیادہ سخت پابندیوں سمیت دیگر تمام آپشنز موجود ہوں گے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں