.

بشار الاسد کے ساتھ تعاون ممکن نہیں ہے: جنرل سالم ادریس

باغی فوج کے ذمہ دار نے بشار کے ساتھ مل کر لڑنے کی تردید کر دی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

شام کی باغی فوج کے ذمہ دار جنرل سالم ادریس نے کہا ہے کہ بشار الاسد کی افواج غدار ہیں ۔ ان کے ساتھ کسی بھی قسم کے تعاون کا سوال ہی پیدا نہیں ہو سکتا۔ جنرل سالم ادریس نے اس امر کا اظہار ''العربیہ '' کو دیے گئے اپنے خصوصی انٹرویو میں کیا ہے۔

اس سے پہلے جنرل سالم ادریس کے حوالے سے برطانوی اخبار ٹائمز میں یہ رپورٹ ہوا تھا کہ وہ بشارالاسد کے شانہ بشانہ القاعدہ کیخلاف لنے کو تیار ہیں۔

برطانوی ٹائمز کے مطابق سالم ادریس نے خبردار کیا تھا کہ'' القاعدہ سے منسلک گروپ آئی ایس آئی ایل بشارالاسد سے آزاد کرائے گئے علاقوں پر مکمل کنٹرول کیلیے کوشاں ہے، اس لیے انقلابی افواج انتہا پسندوں کے خاتمے کیلیے بشار رجیم کی افواج کا ساتھ دے سکتی ہیں۔''

ٹائمز میں شائع ہونے والے ان مبینہ خیالات سے شام میں بشار کیخلاف جاری مزاحمت کے خدوخال میں ایک واضح تبدیلی کا اشارہ سامے آ گیا تھا۔ کہ باغی افواج کیطرف سے پہلی مرتبہ شام میں لڑنے والے اسلام پسندوں کے بارے میں کھلے عام ایک تشویش کا اظہارسامنے آیا تھا۔

جنرل سالم ادریس کے حوالے سے برطانوی اخبار نے یہ بھی تاثر دیا تھا کہ جنیواٹو میں شرکت کیلیے اپوزیشن نےاپنے مطالبات نرم کر دیے ہیں، تاہم جنرل سالم ادریس نے ان امور کی تردید کی ہے کہ ان کا بشارالاسد کی حکومت کیلیے اپنے موقف میں نرمی پیدا کرنے کا ارادہ ہے۔