نیلسن منڈیلا: آخری رسومات مہنگی پڑیں گی: اسرائیل

نیتن یاہو کا شرکت کا فیصلہ تبدیل، 20 لاکھ ڈالر کیوں خرچیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اسرائیل نے عظیم افریقی ہیرو اور جنوبی افریقہ کے سابق صدر نیلسن منڈیلا کی آخری رسومات میں شرکت سے اپنے وزیر اعظم کو یہ کہہ کر روک دیا ہے کہ اس سے اسرائیلی خزانے پر بوجھ پڑے گا ۔

اسرائیلی وزیر اعظم نیتن یاہو نے اس سے پہلے نیلسن منڈیلا کی آخری رسومات میں شرکت کا فیصلہ کیا تھا۔ لیکن بعد ازاں معلوم ہوا ہے کہ جنوبی افریقہ سفری اور حفاظتی اخراجات کا تخمینہ بیس لاکھ ڈالر ہے۔ اس لیے اب نیتن یاہو جنوبی افریقہ نہیں جائیں گے۔

اسرائیلی میڈیا میں نیتن یاہو کو ایک شاہ خرچ کے طور پر زیر بحث لایا جاتا ہے، حال ہی میں وزیر اعظم کے گھر میں بنے سومنگ پول میں صرف پانی بھرنے پر 23000 ڈالرخرچ ہونے کی خبریں سامنے آئیں۔ جبکہ پچھلے سال تین گھروں کے اخراجات دس لاکح ڈالر رہے تھے۔ لیکن ایک آزادی پسند اور نسلی امتیازکی مخالف عالمی شخصیت کی رسومات میں جانا اسرائیل کیلیے کئی دیگر حوالوں سے بھی مہنگا پڑ سکتا تھا، اس لیے اخراجات زیادہ ہونے کو جواز بنا کر نیتن یاہو کا دورہ منسوخ کر دیا گیا ہے۔

واضح رہے اب تک 50 کے قریب مملکتوں یا حکومتوں کے سربراہوں نے نیلسن منڈیلا کی آخری رسومات میں شرکت کا ارادہ ظاہر کیا ہے۔ جبکہ مجموعی نور پر 80000 لوگ ان رسومات میں شریک ہوں گے۔ ان میں امریکی صدر اوباما اور ان کی اہلیہ بھی ہوں گی۔

فلسطینی اتھارٹی کے صدر محمود عباس نے بھی اس عالمی لیڈر کو خراج تحسین پیش کرنے کیلیے جنوبی افریقہ جانے کا فیصلہ کیا ہے۔
نیلسن منڈیلا کی تدفین انکے آبائی گاوں میں 15 دسمبر کو ہو گی۔ واضح رہے اس گاوں میں منڈیلا نے اپنی زندگی کے ابتدائی سال گذارے تھے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں