.

امریکا نے شمالی شام کے لیے غیر مہلک امداد روک لی

اسلامی جنگجوؤں کے حزب اختلاف کی فورسز کے گوداموں پر قبضے کے بعد فیصلہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکا نے باغیوں کے زیر قبضہ شام کے شمالی علاقے میں ہر قسم کی غیر مہلک امداد روکنے کا اعلان کیا ہے۔

دمشق میں امریکی سفارت خانے کے ترجمان کی جانب سے بدھ کو جاری کردہ ایک بیان کے مطابق شمالی شام کے لیے غیرمہلک امداد روکنے کا فیصلہ اسلامی فرنٹ کے جنگجوؤًں کے حزب اختلاف کی سپریم فوجی کونسل کے ہیڈکوارٹرز اور گوداموں پر قبضے کے بعد کیا گیا ہے۔

تاہم ترجمان کا کہنا ہے کہ اس فیصلے سے شامیوں کے لیے انسانی امداد متاثر نہیں ہوگی اور بین الاقوامی اور غیر سرکاری تنظیموں کے ذریعے یہ امداد تقسیم کرنے کا سلسلہ جاری رہے گا۔

واضح رہے کہ امریکا نے فروری میں شامی حزب اختلاف سے تعلق رکھنے والے جنگجوؤں کو غیر مہلک امداد مہیا کرنے کا فیصلہ کیا تھا اور اس کا مقصد صدر بشارالاسد پر اقتدار چھوڑنے کے لیے دباؤ بڑھانا تھا۔

اس غیر مہلک امداد میں خوراک کے ہزاروں پیکٹ، تین ٹن سے زیادہ ادویہ اور دیگر طبی سامان شامل ہے۔ستمبر میں شامی حزب اختلاف کے ایک بڑے گروپ نے کہا تھا کہ امریکا نے جیش الحر سے تعلق رکھنے والے باغیوں کو مہلک ہتھیار مہیا کرنے شروع کردیے ہیں۔