جامعہ کویت میں اخوانی طلباء نے محفل موسیقی کا انعقاد روک دیا

کویتی اخوان المسلمون تصادم کی راہ پر گامزن؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

کویت میں اخوان المسلمون کے حامی طلباء نے ملک کی سب بڑی درسگاہ جامعہ کویت میں محفل موسیقی منعقد کرنے سے روک دیا۔ اخوانی طلباء کا کہنا ہے کہ محفل موسیقی میں ایسے آلات کا استعمال کیا جانا تھا جن کا اسلامی شریعت میں کوئی جواز نہیں ہے۔

العربیہ ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق اخوانی طلباء نے جامعہ کویت میں محل موسیقی کے لیے فلمی ڈئیلاگ "میں انسان ہوں" کے استعمال سے بھی روک دیا ہے۔ اخوان المسلمون کے حامی طلباء کی جانب سے اس اقدام کی دیگر طلباء تنظیموں اور سماجی حلقوں کی جانب سے سخت مذمت کی جا رہی ہے۔

درایں اثناء ایک دوسری پیش رفت میں اخوان المسلمون کے حامی طلباء نے بیلجیئم کے دارالحکومت برسلز کے لیے جامعہ کویت کے زیر اہتمام ایک ثقافتی ٹور کے دوران طالبات کے ساتھ ان کے محرم کی موجودگی لازمی قرار دی ہے۔ ان طلباء کا کہنا ہے کہ وہ محرم کے بغیر اس ٹور میں شامل ہونے والی طالبات کی رجسٹریشن نہیں ہونے دیں گے۔

اخوان المسلمون کے حامی طلباء کی جانب سے جامعہ کویت کے معاملات میں مداخلت پر ایک نئی بحث بھی چھڑ گئی ہے۔ کویتی رکن پارلیمنٹ صفاء الھاشم نے اخوانی طلباء کےاقدام کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے اسے طلباء کے معاملات اور ان کی آزادی میں مداخلت قرار دیا۔

انہوں نے برسلز کے ثقافتی ٹور میں طالبات کے ہمراہ ان کے محرم کی موجودگی کی شرط کو بھی بلا جواز قرار دیا اور وزیر تعلیم سے مطالبہ کیا کہ وہ اخوانی طلباء کی جامعہ کے معاملات اور طلباء کی آزادیوں میں مداخلت کی روک تھام کے لیے موثر اقدامات کریں۔

کویتی صحافی اور دانشور فواد ھاشم نے"العربیہ" ٹی وی سے گفتگو کرتے ہوئے خدشہ ظاہر کیا کہ جامعہ کویت میں اخوانی طلباء کی بالادستی کی کوشش حکومت کے ساتھ تصادم کی راہ اختیار کرنا ہے۔ اخوانی طلباء کی بڑھتی سرگرمیاں کویت کے مستقبل پر بھی ایک بڑا سوالیہ نشان ہیں۔

انہوں نے کہا کہ اخوان المسلمون سلفیوں کی طرح سخت گیر جماعت نہیں رہی۔ مصر میں اخوان المسلمون کے ایک سالہ دور حکومت میں نائٹ کلبوں اور جوا خانوں سے 40 ملین مصری پاؤنڈ ٹیکس وصول کیا گیا۔

کویت میں بھی اخوان المسلمون گذشتہ 33 سال سے موجود ہے لیکن ماضی میں کسی ادارے میں اخوان کے حامیوں کی جانب سے گڑ بڑ کی مثال سامنے نہیں آئی۔ ایسا پہلی مرتبہ ہوا ہے کہ اخوان کے حامی طلباء نے یونیورسٹی کو یرغمال بنانے کی کوشش کی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں