.

جان کیری کا جیش الحر کے سربراہ پر اعتماد کا اظہار

"امریکا اپوزیشن جنگجووں کی انسانی امداد جاری رکھنے گا"

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکی وزیر خارجہ جان کیری کا کہنا ہے کہ ان کے ملک نے شام میں زمینی صورتحال کا جائزہ لینے کے بعد حکومت مخالف جنگجووں کو غیر مہلک اسلحہ فراہمی کا سلسلہ معطل کیا ہے، تاہم امریکی عہدیدار کا کہنا تھا کہ امریکا جیش الحر کے کمانڈر انچیف جنرل سلیم ادریس کی قیادت پر اعتماد کرتا ہے۔ انہوں نے اپوزیشن کے لئے امریکی امداد جاری رکھنے کا بھی اعلان کیا۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے اپنے ایک اخباری بیان میں کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ حالیہ چند دنوں میں جو کچھ ہوا، اس کا ہماری [امریکی] امداد پر کوئی اثر نہیں پڑے گا۔ ہم اپوزیشن کے لئے اپنی مادی امداد کا سلسلہ پہلے کی طرح جاری رکھیں گے۔

شامی اپوزیشن نے اپنے مغربی حلیفوں سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ انہیں شامی سرزمین پر اپنی فوج کو منظم کرنے میں مدد فراہمی کی غرض سے مالی امداد جاری رکھیں۔ ادھر فرانس نے امریکا کی جانب سے شامی باغیوں کو غیر مہلک اسلحہ فراہمی روکنے کے امریکی فیصلے پر حریت کا اظہار کیا ہے۔

امریکی وائٹ ہاوس کے ترجمان جوش ارنسٹ نے گذشتہ روز شمالی شام کے لئے غیر مہلک امداد بند کرنے کا اعلان کیا تھا، تاہم ترجمان کے بقول اس بندش کا اطلاق انسانی امداد پر نہیں ہو گا۔

انہوں نے کہا کہ امریکا، جیش الحر کے گولا بارود گودام پر اسلامی محاذ کے جنگجووں کے قبضے کی خبروں پر انتہائی تشویش میں مبتلا ہے۔ درایں اثنا انقرہ میں امریکی سفارتخانے نے بھی امداد بند کرنے کا اعلان کیا تھا، تاہم سفارتخانے یہ واضح کیا کہ اس فیصلے سے امریکا سے آنے والی انسانی امداد متاثر نہیں ہو گی کیونکہ یہ امداد غیر حکومتی تنظیموں کے ذریعے تقسیم ہوتی ہے۔

شامی جیش الحر نے امریکا اور برطانیہ سے اپیل کی ہے کہ وہ شامی اپوزیشن کو غیر مہلک امداد بند کرنے کے اپنے فیصلے پر نظر ثانی کرے۔ امریکا نے شمالی شام کے علاقے باب الھوی میں اپوزیشن کے اسلحہ گودام پر شدت پسند اسلامی جنگجووں کے قبضے کی خبروں کے غیر مہلک امداد کا سلسلہ بند کرنے کا اعلان کیا تھا۔