.

اسرائیل وزیر اعظم کیلیے''ائیر فورس ون'' خریدے گا

نیتن یاہو چارٹرڈ طیارے میں ڈبل بیڈ لگوا کر زیادہ اخراجات کرتے ہیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اسرائیل نے اپنے وزیراعظم کی سفری ضروریات کیلیے دوسرے ممالک کی طرح مشہور زمانہ جیٹ طیارہ المعروف ائیر فورس ون خریدنے پر غور شروع کر دیا ہے۔ اس ضرورت کا احساس وزیر اعظم بنجمن نیتن یاہو کی طرف سے نیلس منڈیلا کی آخری رسومات کی تقریب میں نہ جانے کے فیصلے کے بعد ہوا ہے۔

ساری زندگی نسلی پرستی کیخلاف لڑتے رہنے والے نیلسن منڈیلا کی آخری رسومات میں نہ صرف دنیا بھر سے تقریبا ایک سو حکومتی و مملکتی سربراہوں یا حکومتی نمائندوں نے شرکت کی تھی بلکہ عالمی میڈیا نے بھی اس موقع پر بھر پور کوریج کی اور نسلی پرستی کی لعنت کیخلاف منڈیلا کی خدمات کا چرچا کیا۔

نیتن یاہو نے اس ماحول میں بظاہر اخراجات زیادہ ہو جانے کے خدشے کے باعث جوہانسبرگ نہ جانے کا فیصلہ کیا تھا ۔ سرکاری طور سفر اور اس دوران سکیورٹی پر ایک خطیر رقم کو جواز بنا کر کہا گیا تھا وزیر اعظم کا جنوبی افریقہ جانا مہنگا پڑ سکتا ہے۔

واضح رہے جب جنوبی افریقہ میں فاتح نسل پرستی کی آخری رسومات جاری تھیں تو اسرائیل میں ایک سیاہ فام یہودی رکن پارلیمنٹ کا خون کا عطیہ قبول کرنے سے اس لیے انکار کر دیا گیا تھا کہ اعلی حکام نے سیاہ فام یہودیوں کے خون کو مشکوک قرار دے رکھا تھا۔

اب اسرائیل نے وزیر اعظم کیلیے خصوصی طیارہ فراہم کرنے کے معاملے کا جائزہ لینے کیلیے ایک کمیٹی بھی قائم کر دی ہے، جیسا کہ بہت سارے ملکوں کے سربراہان کے پاس ''ائیر فورس ون '' کے کال سائن والا خصوصی طیارہ ہوتا ہے۔

ابتدائی تجویز کے مطابق طیارہ خریدے جانے کی صورت میں وزیر اعظم کے علاوہ اسرائیلی صدر بھی بوقت ضرورت یہ جہاز استعمال کر سکیں گے۔

اسرائیلی سرکاری بیان کے مطابق فی الحال وزیر اعظم کے بیرونی دوروں کیلیے طیارہ کمرشل کمپنیوں سے چارٹر کرایا جاتا ہے جو کافی زیادہ اخراجات کا حامل ہوتا ہے۔ جبکہ نیتن یاہو پر زیادہ اخراجات کرنے کے حوالے سے عام طور پر تنقید کی جاتی ہے۔

نیتن یاہو پر یہ اعتراض بھی کیا جاتا ہے کہ وہ چارٹرڈ طیارے میں بھی اپنی ضروریات کے تحت ڈبل بیڈ نصب کراتے ہیں حتی کہ برطانیہ کی سابق وزیر اعظم مار گریٹ تھیچر کی آخری رسومات میں شرکت کیلیے گئے تو بھی چارٹرڈ طیارے میں نیتن یاہو نے ڈبل بیڈ نصب کرایا اور اس برطانوی سفر کے اخراجات ایک لاکھ ستائیس ہزار ڈالر رہے۔

رواں سال ماہ مارچ میں یہ رپورٹس سامنے آئیں کہ وزیر اعظم اور ان کے اہل خانہ کو صرف آئس کریم کھانے کیلیے 10000شیکل کا الاوںس دیا جاتا ہے۔

ماہ مئی میں میڈیا میں یہ رپورٹس آئیں کہ نیتن یاہو کہ سمندر کنارے بنے ذاتی گھر کی ضروریات کیلیے سرکاری خزانے سے تین لاکھ اٹھارہ ہزار اسرائیلی خرچ کیے گئے جبکہ اس گھر میں موجود سومنگ پول میں پانی بھرنے پر سرکاری خزانے سے 85000 اسرائیلی شیکل کا اخراجات کیے گئے۔

اسرائیل کے سیکرٹری کابینہ نے ''ائیر فورس ون'' کی خرید داری کو سکیورٹی کے مقاصد کے حوالے سے بھی اہم قرار دیا اور کہا کہ طیارہ خریدنے سے آئندہ کئی برسوں کی ضرورت پوری ہو گی۔ سیکرٹری کابینہ کے مطابق وزارت خزانہ بھی پچھلے سال اپنا طیارہ خریدنے کو کفایتی اقدام قرار دے چکی ہے۔