.

اسد کا عراق حکومت سے رابطہ شامی عوام کے مفاد میں نہیں: علاوی

"عراق، ایران سے شام اسلحہ لیجانے والے جہاز روک سکتا ہے"

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عراق میں العراقیہ لسٹ کے سربراہ ایاد علاوی کا کہنا ہے کہ بشار الاسد اور عراق میں نوری المالکی کی حکومت کے درمیان حالیہ تعلقات شامی عوام کے لئے نقصان کا باعث بن رہے ہیں۔

'العربیہ' سے بات کرتے ہوئے ایاد علاوی نے کہا کہ جب وہ سربراہ حکومت تھے تو انہوں نے نوٹس کیا تھا کہ شامی حکومت عراق میں حنگجو بھیجنے کے معاملے پر تساہل سے کام لے رہی تھی، جس کے بعد انہیں اپنے وزیر داخلہ کو سرحد پر بھیج کر معاملات ٹھیک کرنا پڑے۔

انہوں نے بتایا کہ اس وقت کے عراقی وزیر داخلہ اور میں نے شامی صدر بشار الاسد کے نام خط لکھا تھا اور ہم نے سرحدوں کی نگرانی اور کنڑول کے لئے دمشق ۔ بغداد مشترکہ کمیٹی بھی تشکیل دی تھی۔ شامی حکومت نے اس وقت ہم سے بہتر تعاون کیا تھا۔ تاہم عراق میں نئی حکومت کے آتے ہی یہ تعاون مزید بڑھا، تاہم اس کی نئی جہت شامی عوام کے مفاد میں نہیں ہے۔ یہ تعاون عراق بلکہ پورے خطے کے مفادات کے حق میں نہیں ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ عراق، ایران سے شام اسلحہ لیجانے والے جہازوں کو روکنے کی صلاحیت رکھتا ہے، تاہم نوری المالکی کی حکومت دنیا کے سامنے اس ضمن میں اپنی بے بسی کا مظاہرہ کر کے عالمی ضمیر کو دھوکا دے رہی ہے۔