.

یو اے ای، اومان کا غیر ملکی کارگو پر روٹ ٹیکس کا نفاذ

سعودی عرب کی جانب سے جلد ہی نئی پالیسی کا امکان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

متحدہ عرب امارات کے بعد سلطنت آف اومان نے بھی اپنے زمینی روٹ استعمال کرنے والی غیر ملکی کمپنیوں کے کارگو ٹرکوں پرٹیکس عائد کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

قبل ازیں متحدہ عرب امارات نے اپنی سرزمین استعمال کرنے والی غیر ملکی ٹریفک پر روٹ ٹیکس لگا دیا تھا۔ ادھرسعودی عرب میں بھی اسی نوعیت کے فیصلے پرغور کیا جا رہا ہے۔ امکان ہے کہ جلد ہی ریاض بھی اس ضمن میں کوئی نئی پالیسی جاری کرے گا۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق سلطنت آف اومان نے ابتدائی طور پر کرش مشینوں، ان کے آلات، کرینوں اور لوہے کے دیگر سامان کی اپنی زمینی حدود میں ترسیل پر روٹ ٹیکس کے نفاذ کا فیصلہ کیا ہے۔ اگلے دنوں میں ٹیکس کا دائرہ دیگراشیاء تک بڑھایا جا سکتا ہے۔

رپورٹ کے مطابق سلطنت آف اومان اپنی سر زمین میں داخل ہونے والے ایک مال بردار ٹرک کے 40 درہم وصول کرے گا۔ یہ رقم اومان میں داخل ہوتے ہی ٹول پلازے پر ادا کرنا ہوگی۔ اومان کے سیکرٹری صنعت و تجارت انجینیئر احمد الذیب کا کہنا ہے کہ غیر ملکی مال برادر ٹرک ماضی میں ہماری سر زمین استعمال کرتے رہے ہیں۔ نئی پالیسی کے تحت غیر ملکی کمپنیوں کو اومانی مصنوعات اور مقامی ٹرکوں سے استفادے کا بھی موقع ملے گا۔

قبل ازیں متحدہ عرب امارات نے بھی اپنی سرزمین سے گذرنے والی غیرملکی ٹریفک پر روٹ ٹیکس عائد کرنے کا فیصلہ کیا تھا۔ یو اے ای کی جانب بتایا گیا ہے کہ مسافر بسوں پر100 ، فی سیٹ پانچ، مال بردار ٹرک کے100 اور ہرغیر ملکی شخص سے فی کس دس درہم ٹیکس لیا جائے گا۔

خلیجی ریاستوں کے درمیان بین الملکی ٹرانسپورٹ پر ٹیکس کے فیصلوں کی مخالفت بھی سامنے آئی ہے۔ سعودی ٹرک یونین کی چیمبرز کونسل کے چیئرمین سعود النفیعی کا کہنا ہے کہ سنہ 2002 اور 2008ء میں خلیجی ریاستوں کے درمیان اقتصادی تعاون کے سمجھوتوں کی رو سے کسی ملک کا بیرونی ٹریفک اور مال بردار ٹرکوں پر ٹیکس عائد کرنا غیر مناسب اقدام ہے۔ النفیعی کا کہنا ہے کہ ان دونوں معاہدوں میں خلیجی ممالک کے ٹریفک کو "ٹیکس فری" قرار دینے کی سفارش کی گئی ہے۔ تمام ممبر ممالک نے اس سفارش کی حمایت میں دستخط کر رکھے ہیں۔