.

اخوان المسلمون کا انقلاب 2011ء کی سالگرہ منانے کا اعلان

4 اور 20 جنوری کو میدان التحریر اور رابعہ اسکوائر میں ریلیاں منعقد کی جائیں گی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مصر کی مسلح افواج کی نگرانی میں قائم عبوری حکومت کے عتاب کا شکار اخوان المسلمون نے سابق مطلق العنان صدر حسنی مبارک کے خلاف عوامی انقلاب کے تین سال پورے ہونے پر احتجاجی ریلیاں منعقد کرنے کا اعلان کیا ہے۔

مصری روزنامے الوطن نے انقلاب کی تیسری سالگرہ کے موقع پر اخوان المسلمون کے ''آزادی اور عوامی منشاء کو برقرار رکھنے'' کے نام سے پروگرام کی تفصیل شائع کی ہے۔یہ منصوبہ 24 نومبر کو وضع کیا گیا تھا اور اس پر 25 جنوری کو انقلاب کی سالگرہ سے قبل 4 جنوری سے عمل درآمد کیا جائے گا۔

اخوان المسلمون کے پروگرام کے تحت مصر بھر میں ''مصری منشاء کی آزادی ،فوجی انقلاب کی شکست اور قانون کی حکمرانی کی بحالی'' کے نام سے ریلیاں منظم کی جائیں گی۔20 جنوری کو برطرف صدر ڈاکٹر محمد مرسی کے حامی قاہرہ کے مشہور میدان التحریر اور رابعہ العدویہ چوک سمیت دوسرے شہروں کے اہم مقامات پر اجتماعات منعقد کریں گے۔

مظاہرین ان ریلیوں اور اجتماعات کے دوران حکومت سے ڈاکٹر محمد مرسی کی بحالی سمیت اپنے دوسرے مطالبات کو پورا کرنے کا تقاضا کریں گے۔اگر ایسا نہیں ہوتا تو پھر وہ دو مراحل میں اپنے منصوبے کو عملی جامہ پہنائیں گے۔پہلے مرحلے میں 25جنوری کو قاہرہ میں بعض سفارت خانوں کا محاصرہ کیا جائے گا اور میدان التحریر میں اجتماع منعقد کیا جائے گا۔

وطن کی اطلاع کے مطابق دوسرے مرحلے میں وزارت داخلہ پر چڑھائی کی جائے گی ،پولیس اسٹیشنوں کا کنٹرول حاصل کیا جائے گا۔ان کے علاوہ میڈیا پروڈکشن سٹی پر بھی چڑھائی کی جائے گی۔اخبار نے اس تمام پروگرام کی تفصیل کے حوالے سے اخوان کے کسی لیڈر کا کوئی بیان نقل نہیں کیا اور نہ یہ بتایا ہے کہ اس کو یہ تمام منصوبہ کہاں سے ملا ہے۔