عراقی وزیر دفاع بارودی سرنگ حملے میں محفوظ، 2 محافظ زخمی

دھماکے سے قافلے میں شامل ایک گاڑی کو معمولی نقصان پہنچا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

عراقی وزیر دفاع سعدون الدلیمی کا قافلہ سڑک کے کنارے بچھائی گئی ایک بارودی سرنگ کے حملے کا نشانہ بنا ہے تاہم حملے میں وہ مکمل طور پر محفوظ رہے ہیں، البتہ اس کارروائی میں ان دو کے باڈی گارڈز زخمی ہوئے اور قافلے میں شامل ایک کار کو نقصان پہنچا ہے۔

عراقی وزارت اطلاعات ونشریات نے بھی وزیر دفاع کے قافلے کے ساتھ پیش آئے حادثے کی تصدیق کی ہے۔ وزارت اطلاعات کا کہنا ہے کہ وزیر دفاع سعد الدلیمی فلوجہ سے الرمادی جا رہے تھے کہ جب سڑک کنارے نصب کردہ بم پھٹنے سے ان کے قافلے میں شامل ایک کار کو جزوی نقصان پہنچا۔ حملے میں دو سیکیورٹی اہلکار زخمی بھی ہوئے ہیں۔

خیال رہے کہ عراق کے سُنی اکثریتی صوبہ الانبار شدت پسند تنظیم القاعدہ اور عراقی فوج کے درمیان لڑائی کا اہم مرکز رہا ہے۔ عراقی فوج کو شام سے متصل 600 کلومیٹر کی طویل سرحد پر القاعدہ کے جنگجوؤں کے حملوں کا سامنا رہا ہے جس کے باعث الانبار کا صوبہ بری طرح متاثر ہوا ہے۔

گذشتہ ہفتے اسی صوبے میں القاعدہ کے مبینہ شدت پسندوں کےحملے میں عراقی فوج کے پانچ افسروں سمیت پندرہ اہلکار ہلاک ہو گئے تھے۔ اس کے بعد عراقی فوج نے سرحد پر پھیلے صحرائی علاقے پرالقاعدہ کے گیارہ ٹھکانوں کے خلاف آپریشن شروع کر دیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں