بیروت بم دھماکا، ذمہ دار بشارالاسد اور اتحادی ہیں: شامی اپوزیشن

دھماکے میں قریباً ساٹھ کلو بارود استعمال کیا گیا: سکیورٹی حکام

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

شام کی اپوزیشن جماعتوں کے اہم دھڑے نے لبنان میں جمعہ کے روز خوفناک بم دھماکے کی ذمہ داری بشار رجیم ، ایران اور لبنانی شیعہ ملیشیا حزب اللہ پر عاید کی ہے۔ لبنان کے دارالحکومت بیروت میں حکومتی ہیڈکوارٹرز کے قریب اس بم دھماکے کے نتیجے میں ایک سابق وزیر محمد شطہ بھی ہلاک ہو گئے تھے۔

شامی اپوزیشن کے دھڑے شامی قومی کونسل کے مطابق بیروت دھماکے کے بھی وہی ذمہ دار ہیں جو شام میں قلمون، الغوطہ، حلب اور دیگر شہروں میں بے گناہ شہریوں کے قتل عام کے ذمہ دار ہیں۔

شامی نیشنل کونسل کے کا کہنا ہے کہ '' اس میں رتی بھر شک نہیں ہے کہ بشار الاسد، ایران ، فرقہ وارانہ بنیاد پر منظم حزب اللہ اور ان کے ایجنٹ ہی معصوم شہریوں کے قاتل ہیں۔''

واضح رہے جمعہ کے روز ہونے والے دھماکے میں 63 سالہ سابق وزیر محمد شطہ سمیت متعدد افراد ہلاک اور زخمی جبکہ دس عمارات کو نقصان پہنچا اور کئی گاڑیاں تباہ ہوئی ہیں۔

بیروت کے سکیورٹی حکام کے مطابق اس دھماکے میں پچاس سے ساٹھ کلو گرام بارود استعمال کیا گیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں