انصار بیت المقدس، الفرقان بریگیڈ اخوان کے عسکری ونگ ہیں: خرباوی

30 جون کی 'کاری ضرب' نے جماعت کا توازن تبدیل کردیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

مصر کی کالعدم اور دہسشت گرد قرار دی جانے والی دینی سیاسی جماعت اخوان المسلمون کے ایک منحرف رہنما اور ممتاز دانشور ثروت الخرباوی نے کہا ہے کہ عسکریت پسند تنظیمیں انصار بیت المقدس اور الفرقان بریگیڈ اخوان کے عسکری ونگ ہیں۔

مصری دانشور نے ان خیالات کا اظہار "العربیہ" کے قاہرہ سے نشر ہونے والے پروگرام "مصر اپڈیٹ" میں گفتگو کے دوران کیا۔ انہوں نے کہا کہ تیس جون 2013ء کو فوج اور عوام کی جانب سے کاری ضرب لگنے کے بعد اخوان المسلمون کا تنظیمی توازن تبدیل ہو چکا ہے۔

ایک سوال کے جواب میں سابق اخوانی رہنما کا کہنا تھا کہ سنہ 2001ء میں اخوان کی زیر حراست قیادت ہر چیز سے فرار اختیار کرنے پر تُل چکی تھی۔ ان کے بہ قول جماعت حقیقت سے انکار کے مرض میں مبتلا ہو چکی ہے۔

ثروت الخرباوی کا کہنا تھا کہ اخوان المسلمون من گھڑت اور جھوٹ کے فروغ میں یہودیوں کے شانہ بشانہ چل رہی ہے۔ اخوان المسلمون کے ایک دوسرے منحرف لیڈرعبدالمنعم ابوالفتوح نے اخوان کی عالمی تنظیم کی حقیقت سے انکار کر دیا تھا۔ ثروت خرباوی کا کہنا تھا کہ سنہ 2000ء میں حج کے موقع پر میری ترک وزیر اعظم رجب طیب ایردوآن سے ملاقات ہوئی، جس میں انہوں نے کہا تھا کہ "یہ مت بھولیے کہ ہم اخوانی ہیں"۔ یہ اس امر کا بین ثبوت تھا کہ اخوان المسلمون ایک عالمی تنظیم بن چکی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں