.

مصر:شمالی سیناء میں پولیس اور فوج کے قافلے پر تین بم حملے

غزہ کی حکمراں حماس نے مصری وزیرداخلہ کے الزامات مسترد کردیے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مصر کے شورش زدہ علاقے شمالی سیناء میں فوج اور پولیس کے قافلے کے نزدیک تین بم دھماکے ہوئے ہیں جن کے نتیجے میں چار فوجی زخمی ہوگئے ہیں۔

مصر کے ایک سرکاری عہدے دار نے اپنی شناخت ظاہر نہ کرنے کی شرط پر بتایا ہے کہ جمعہ کو غزہ کی پٹی کے نزدیک واقع قصبے شیخ زوید قریب تین دھماکے ہوئے ہیں۔ان میں سے ایک دھماکا سڑک کے کنارے نصب بم کے پھٹنے سے ہوا ہے۔

جزیرہ نما سیناء کے شمالی علاقے میں 3جولائی کو مسلح افواج کے ہاتھوں مصر کے منتخب صدر ڈاکٹر محمد مرسی کی برطرفی کے بعد سے جنگجو گروپوں نے سرکاری سکیورٹی فورسز پر حملے تیز کررکھے ہیں۔

القاعدہ سے متاثر انصار بیت المقدس نامی جنگجو تنظیم نے گذشتہ ہفتے مصر کے شہر منصورہ میں پولیس کے ہیڈکوارٹرز پر بم حملے کی ذمے داری قبول کی تھی لیکن مصری حکومت نے اس حملے کو جواز بنا کر ملک کی سب سے بڑی مذہبی وسیاسی جماعت اخوان المسلمون کو دہشت گرد قرار دے دیا ہے۔

درایں اثناءغزہ کی پٹی کی حکمراں فلسطینی تنظیم حماس نے مصری وزیرداخلہ کے ان الزامات کو مسترد کردیا ہے جن میں انھوں نے کہا تھا کہ دسمبر کے آخر میں منصورہ میں سکیورٹی ڈائریکٹوریٹ پر بم حملے میں اس کا ہاتھ تھا۔

حماس کے ترجمان سامی ابو زہری نے کہا کہ ''مصری وزیرداخلہ محمد ابراہیم کی جانب سے لگائے گئے الزامات غلط اور بے بنیاد ہیں''۔مصری وزیرداخلہ نے جمعرات کو نیوزکانفرنس میں کہا تھا کہ حماس نے اخوان المسلمون کے حامیوں کو اس طرح کی کارروائیوں کے لیے تربیت اور لاجسٹک سپورٹ مہیا کی تھی۔