.

شامی اپوزیشن، اہم دھڑے نے جنیوا ٹو کو مسترد کر دیا

جنیوا امن کانفرنس کا بنیادی خیال ہی درست نہیں ہے، شامی نیشنل کونسل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

شام کے اپوزیشن اتحاد میں شامل اہم گروپ شامی نیشنل کونسل نے 22 جنوری کو متوقع جنیوا ٹو کے نام سے ہونے والی امن کانفرنس میں شمولیت نہ کرنے کا اعلان کیا ہے۔ شامی نیشنل کونسل نے یہ اعلان مختلف عالمی اداروں کے نمائندوں، وفود اور سفارتکاروں سے اپنی حالیہ ملاقاتوں کے بعد کیا ہے۔

شامی نیشنل کونسل کا موقف ہے کہ جنیوا ٹو میں شرکت کا کوئی جواز نہیں ہے۔ دوسری جانب قومی اتحاد نے بھی ابھی تک کوئی کوئی واضح اور دوٹوک پوزیشن نہیں لی ہے کہ آیا اسے جنیوا امن کانفرنس میں شریک ہونا ہے یا نہیں۔

نیشنل کونسل کے سربراہ جارج صابرا نے ماہ اکتوبر میں ہی یہ موقف اختیار کر لیا تھا کہ ان کے گروپ نے جنیوا ٹو میں نہ جانے کا پکا فیصلہ کر لیا ہے۔ اس گروپ کا کہنا ہے کہ جب تک اقتدار میں موجود ہے مذاکرات میں حصہ لینے کا سوال ہی نہیں پیدا ہوتا ہے۔

شامی نیشنل کونسل کے رکن سمیر ناشر کا کہنا ہے کہ یہ فیصلہ کرنے سے پہلے دوسرے بہت سے عالمی رہنماوں اور وفود کے علاوہ احباب شام کے ساتھ بھی مشورہ کیا گیا ہے۔

ان کا کہنا تھا ''جنیوا ٹو کا بنیادی خیال ہی کمزور ہے، یہ شامی رجیم اور اپوزیشن کے درمیان ایک دوسرے کے مطالبات کو سمجھنے کیلیے ایک پل بنانے کی کوشش ہے اور فریقین کو ایک جیسا بنا کر پیش کیا جارہا ہے، اس لیے ہم اسے مسترد کرتے ہیں۔''

سمیر ناشر نے مزید کہا ''جنیوا امن کانفرنس میں شرکت کیلیے شامی نیشنل کونسل کی شرائط کو اقوام متحدہ تسلیم کرتا ہے لیکن روس ماننے کو تیار نہیں ہے، ایسی صورت حال میں ہم بھی اس جنیوا امن کانفرنس کو مسترد کرتے ہیں۔''