.

عراقی شہر فلوجہ پر القاعدہ نے کنٹرول حاصل کر لیا

رامادی اور فلوجہ میں پچھلے کئی دنوں سے کشیدگی چل رہی ہے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عراق میں حکومت اور سکیورٹی فورسز کیلیے سخت مشکلا ت پیدا ہونے کے بعد اہم شہر فلوجہ سرکاری کنٹرول سے نکل گیا ہے اور اس پر القاعدہ کے گروپ آئی ایس آئی ایل نے قبضہ کر لیا ہے۔ القاعدہ کا یہ گروپ عراق اور شام کو اسلامی ریاست کے طور پر دیکھنے کا خواہاں ہے۔

صوبہ انبار میں ایک اہم سرکاری ذمہ دار نے ہفتے کے روز سرکاری افواج کی پسپائی اور القاعدہ کے قبضے کی تصدیق کی ہے ۔ واضح رہے عراقی دارالحکومت بغداد کے مغرب میں واقع فلوجہ اور رامادی میں پچھلے کئی دنوں سے عسکریت پسند زور لگا رہے تھے۔ یہ علاقے ماضی میں بھی سنی اکثریت کے علاقے تھے اور ان میں عسکریت پسندوں کا اثر تھا۔

رامادی میں تازہ لڑائی کا آغاز پیر کے روز اس وقت ہوا جب سکیورٹی فورسز نے سنی مسلمانوں کا حکومت مخالف احتجاجی کیمپ اکھاڑ پھینک کر قبضہ کر لیا۔ یہ احتجاجی مرکز ایک سال سے متحرک چلا آرہا تھا۔

اس واقعے کے خلاف غم وغصہ فلوجہ تک پھیل گیا بعدازاں حکومت کو ان دونوں علاقوں سے فورسز کو واپس بلانا پڑا۔ یوں آئی ایس آئی ایل کے لیے کام آسان ہو گیا۔ سکیورٹی حکام کے مطابق رامادی اور فلوجہ میں جمعہ کے روز ایک سو زائد لوگ مارے گئے تھے۔ اب ہفتے کے روز القاعدہ نے فلوجہ پر کنٹرول حاصل کر لیا۔