.

اپنے شہری کو امریکا کے حوالے نہیں کر سکتے، یمن

سلفی جماعت کے سیکرٹری جنرل کو امریکا نے مانگا تھا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن کے صدر نے مذہبی اعتبار سے کٹر خیالات کے حامل رہنما کو امریکا کے حوالے کرنے سے انکار کر دیا ہے۔ مذہبی رہنما پر الزام ہے کہ وہ القاعدہ کو مالی وسائل فراہمی کا ذریعہ ہیں۔

یمن کے سرکاری ٹی وی سے نشر ہونے والے ایک صدارتی بیان میں کہا گیا ہے کہ صدر منصور ہادی نہ کہا ہے کہ ''یمن نے امریکی حکومت کو بتا دیا ہے کہ ہم عبدالوہاب محمد عبدالرحمان ہمائے کانی سمیت اپنے کسی شہری کو کسی دوسرے ملک کے حوالے نہیں کریں گے۔''

واضح رہے عبدالرحمان ہمائے کانی ملک کی پہلی سلفی جماعت کی یمنی رشاد یونین کے سیکرٹری جنرل ہیں۔

ماہ دسمبر میں امریکا نے سلفی رہنما پر اس الزام کے تحت پابندیاں عاید کردی تھیں کہ یمن کے ایک رفاہ عامہ کے ادارے کے سربراہ ہونے کے ناطے وہ القاعدہ کے ایک ایسے گروپ کو مالی امداد دیتے ہیں جو جزیرہ نما عرب میں سرگرم ہے۔