.

"شیرون جنگی مجرم تھا، ہاتھ فلسطینیوں کے خون سے رنگے"

فلسطینی رہنماوں نے شیرون کو یاسر عرفات کا بھی قاتل قرار دیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

فلسطینیوں نے سابق اسرائیلی وزیراعظم ایرل شیرون کےانتقال کو ایک تاریخی لمحہ قرار دیتے ہوئے جنگی مجرم ہونے کے باوجود زندگی بھر جنگی جرائم کی عالمی عدالت میں پیش نہ ہونے پر افسوس کا اظہار کیا ہے۔

ایک سینئر فلسطینی رہنما جبریل رجب نے شیرون کی موت پر کہا وہ ایک جنگی مجرم تھا اور فلسطینی قائد یاسرعرفات کے قتل میں بھی ملوث تھا، ہمیں امید تھی کہ اسے عالمی عدالت میں پیش کیا جائے گا لیکن ایسا نہ ہوسکا۔

غزہ میں حکمران فلسطینی جماعت حماس نے شیرون کی موت کا تاریخی لمحہ قرار دیا اور کہا وہ ایک جرائم پیشہ قاتل تھا اور اس کے ہاتھ فلسطینیوں کے خون سے رنگین تھے مگر اسے کبھی جنگی جرائم کی عالمی عدالت میں پیش نہ کیا گیا۔