.

مصری تارکین وطن کی اکثریت کا آئین کے حق میں ووٹ

بیشتردارالحکومتوں میں ریفرینڈم میں مصریوں کے ووٹ ڈالنے کی شرح کم رہی ہے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مصری تارکین وطن کی اکثریت نے ملک کے نئے آئین کے حق میں ووٹ دیا ہے۔تاہم دنیا کے بیشتر دارالحکومتوں میں قائم مصری سفارت خانوں میں منعقدہ ریفرینڈم میں مصریوں کے ووٹ ڈالنے کی شرح بہت کم رہی ہے۔

مصر کی وزارت خارجہ کے ترجمان بدرعبدالعاطی نے سوموار کو ایک نجی ٹی وی چینل سی بی سی کو بتایا ہے کہ اتوار کی صبح تک ریفرینڈم میں پچانوے ہزار تارکین وطن نے اپنا حق رائے دہی استعمال کیا تھا۔

دنیا بھر کے ایک سواکسٹھ ممالک میں مقیم مصری تارکین وطن کے لیے سفارت خانوں اور قونصل خانوں میں پولنگ مراکز قائم کیے گئے تھے۔مصری تارکین وطن کو نئے آئین پر ہونے والے ریفرینڈم میں اپنا ووٹ ڈالنے کے لیے 8جنوری سے 12 جنوری تک وقت دیا گیا تھا۔مصر میں 14 اور 15 جنوری کو نئے آئین پر ریفرینڈم ہورہا ہے۔

ریاض میں العربیہ نیوز چینل کے نمائندے نے بتایا ہے کہ سعودی عرب میں مقیم 98فی صد مصریوں نے ریفرینڈم میں ''ہاں'' میں ووٹ دیا ہے۔کل 23651مصریوں نے اپنا حق رائے دہی استعمال کیا۔ان میں سے23011 نے نئے آئین کے حق میں اور صرف 474 نے 'ناں'' میں ووٹ دیا۔

سعودی عرب میں متعین مصری سفیر عفیفی عبدالوہاب نے بتایا کہ ریاض میں سفارت خانے اور جدہ میں قونصل خانے میں ریفرینڈم کا عمل احسن طریقے سے انجام پایا ہے۔انھوں نے اس سلسلے میں سعودی حکام کے تعاون اور مصریوں کے مہذبانہ رویے کو سراہا۔

متحدہ عرب امارات میں متعین مصری سفیر ایہاب حمودہ نے بتایا ہے کہ 90 فی صد تارکین وطن نے نئے آئین کے حق میں ووٹ دیا ہے۔انھوں نے بتایا کہ گذشتہ ریفرینڈم کے مقابلے میں اس مرتبہ ووٹ ڈالنے کی شرح دوہزار فی صد سے بھی کم رہی ہے کیونکہ اس مرتبہ میل کے ذریعے بھیجے گئے ووٹنگ کو منسوخ کردیا گیا تھا۔

عمان میں متعین سعودی سفیر کے مطابق اردن میں مقیم 4291 مصریوں نے ریفرینڈم کے لیےاپنے ووٹوں کا اندراج کرایا تھا۔ان میں صرف 546 نے اپنا حق رائے دہی استعمال کیا ہے۔ان میں سے 531 نے نئے آئین پر ہاں اور 14 نے ناں میں ووٹ دیا ہے اور ایک ووٹ کو منسوخ کردیا گیا۔

طرابلس میں متعین مصری سفیر محمد ابوبکر نے سرکاری خبررساں ادارے مڈل ایسٹ نیوز ایجنسی (مینا) کو بتایا کہ 97.5 فی صد ووٹروں نے ہاں میں ووٹ دیا ہے۔واشنگٹن میں متعین مصری سفیر محمد توفیق کے مطابق امریکا میں مقیم 95.5 فی صد مصری تارکین وطن ووٹروں نے نئے آئین کی منظوری دے دی ہے۔

امریکا میں مقیم رجسٹرڈ مصری ووٹروں میں سے بہت کم تعداد نے اپنا حق رائے دہی استعمال کیا ہے۔ رجسٹرڈ مصری ووٹروں کی تعداد 6885 تھی لیکن ان میں سے صرف 844 نے اپنا حق رائے دہی استعمال کیا ہے۔ان میں سے 810 نے نئے آئین پر ہاں اور 32 نے ناں میں ووٹ دیا۔دوووٹ منسوخ کردیے گئے۔

فرانس میں مقیم 2111 مصریوں نے ریفرینڈم کے لیے ووٹ ڈالا۔پیرس میں متعین مصری سفیر محمد مصطفیٰ کمال نے مینا کو بتایا کو ان میں سے 98.5 ووٹروں نے ہاں میں ووٹ دیا جبکہ نو ووٹ منسوخ کردیے گئے ہیں۔اٹلی کے دارالحکومت روم میں مصری سفارت خانے میں قائم پولنگ اسٹیشن میں 714 مصریوں نے نئے آئین کے حق میں اور چار نے مخالفت میں ووٹ دیا ہے اور میلان میں قونصل خانے میں 2302 ووٹ ڈالے گئے۔ان میں 2262 نے ہاں اور 28 نے مخالفت میں ووٹ دیا جبکہ 12 ووٹ منسوخ کردیے گئے۔