.

فلسطین میں امریکی وزیر خارجہ جان کیری کے خلاف احتجاجی مظاہرے

مظاہرین کا اسرائیل سے مذاکرات ختم کر کے'یو این' سے رجوع کا مطالبہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکی وزیر خارجہ جان کیری کی جانب سے فلسطینی اتھارٹی پر اسرائیل سے امن سمجھوتے کے لیے دباؤ کے خلاف فلسطین کے مختلف شہروں میں احتجاجی جلوس اور ریلیاں نکالی جا رہی ہیں۔ مظاہرین نے صدر محمود عباس سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ صہیونی حکومت کے ساتھ مذاکرات کی رٹ کے بجائے بنیادی حقوق کے حصول کے لیے اقوام متحدہ سے رجوع کریں۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق بدھ کے روز فلسطینی اتھارٹی کے زیر انتظام مغربی کنارے کے مختلف شہروں میں تنظیم آزادی فلسطین [پی ایل او] میں شامل تنظیموں کی کال پر احتجاجی جلوس نکالے گئے۔ مظاہرین نے امریکا اور اسرائیل دونوں کے خلاف سخت نعرے بازی کی اور امریکی وزیر خارجہ جان کیری کی جانب سے اسرائیل کے ساتھ امن سمجھوتےکے لیے دباؤ مسترد کر دیا۔

رام اللہ میں نکالی گئی مذاکرات مخالف ایک ریلی میں سیکڑوں افراد شریک ہوئے۔ مظاہرین نے ہاتھوں میں بینرز اور پلے کارڈ اٹھا رکھے تھے جن پر اسرائیل سے مذاکرات روکنے اور مسئلے کے حل کے لیے اقوام متحدہ سے رجوع کرنے کے مطالبات درج تھے۔ مشتعل مظاہرین نے 'اسرائیل اور امریکا مردہ باد' اور 'نام نہاد مذاکرات نامنظور' کے نعرے بھی لگائے۔

پی ایل او کی رکن تنظیم عوامی محاذ برائے آزادی فلسطین کے رہ نما قیس ابو لیلیٰ نے کہا کہ اسرائیل سے مذاکرات ایک بے مقصد مشق ہے۔ جب ہمارے پاس اپنے دیرینہ اور اصولی مطالبات منوانے کے لیے اقوام متحدہ کا پلیٹ فارم موجود ہے تو ہمیں نام نہاد امن مذاکرات میں وقت برباد نہیں کرنا چاہیے۔عالمی ادارے کی کئی ذیلی تنظیموں اور ایجنیسوں نے فلسطینیوں کو وہ حقوق دے رکھے ہیں جنہیں اسرائیل فوجی طاقت کے ذریعے دبانے کی سازش کر رہا ہے۔

فلسطینی عوام اسرائیل کے ساتھ کسی امن سمجھوتے مخالف نہیں لیکن ہم یہ بھی جانتے ہیں کہ جنگی مجرموں کے ساتھ معاہدے دیر پاثابت نہیں ہو سکتے ہیں۔ لہٰذا مذاکرات کے بجائے فلسطینی اتھارٹی عالمی قانون کے نفاذ کی کوشش کرے اور جنگی مجرموں کو عالمی عدالتوں کے کٹہرے میں لانے کے اقدامات کرے۔

ریلی سے خطاب کرتے ہوئے فلسطین پیپلز پارٹی کے سیکرٹری جنرل بسام صالحی نے کہا کہ ہم امریکی دباؤ کے تحت اسرائیل کے ساتھ کوئی امن سمجھوتہ قبول نہیں کریں گے۔ اس لیے ہم سب یہ مطالبہ کر رہے ہیں کہ صدر محمود عباس صہیونی ریاست کے ساتھ بات چیت ختم کرنے کا اعلان کریں اور آزاد فلسطینی ریاست کے قیام کے لیے اقوام متحدہ سے رجوع کریں۔

خیال رہے کہ امریکی وزیر خارجہ جان کیری پچھلے کئی ماہ سے فلسطین۔ اسرائیل امن مذاکرات کی مسلسل نگرانی کر رہے ہیں۔ کئی ماہ کے مذاکرات کے باوجود فریقین کسی حتمی معاہدے تک نہیں پہنچ پائے ہیں۔ اس ضمن میں جان کیری نے اپنے طور پر ایک عارضی امن فارمولہ پیش کیا ہے جسے اسرائیل اور فلسطینی اتھارٹی دونوں نے مسترد کر دیا ہے۔