.

مصر:آئینی ریفرینڈم میں ووٹ ڈالنے کی شرح 40 فی صد رہی

ابتدائی نتائج کے مطابق 95 فی صد رائے دہندگان کا آئین کے حق میں ووٹ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مصر کے سرکاری ٹیلی ویژن نے اطلاع دی ہے کہ نئے آئین پرمنعقدہ ریفرینڈم میں 40 فی صد رجسٹرڈ ووٹروں نے اپنا حق رائے دہی استعمال کیا ہے اور ان میں سے 95 فی صد ووٹروں نے نئے آئین کی منظوری دے دی ہے۔

مصر کی عبوری حکومت کا کہنا ہے کہ ملک میں موجود کشیدگی کے باوجود ریفرینڈم میں ووٹ ڈالنے کی شرح بلند رہی ہے۔دوسری جانب فوجی انقلاب مخالف اتحاد کا کہنا ہے کہ ان کے تخمینے کے مطابق صرف گیارہ صد ووٹروں نے اپنا حق رائے دہی استعمال کیا ہے۔

مصر کا الیکشن کمیشن ہفتے کی شام ریفرینڈم کے سرکاری نتائج کا اعلان کرے گا۔اس ریفرینڈم کے بعد توقع ہے کہ مصر کے عبوری صدر عدلی منصور مسلح افواج کے پہلے سے وضع کردہ انتقال اقتدار کے منصوبے میں تبدیلی کا اعلان کریں گے اور وہ پارلیمانی انتخابات سے قبل صدارتی انتخابات کے انعقاد کا اعلان کریں گے۔

مصر میں منگل اور بدھ کو نئےآئین پر منعقدہ ریفرینڈم میں ووٹروں نے اپنا حق رائے دہی استعمال کیا ہے۔ریفرینڈم کے پہلے روز ملک کے مختلف علاقوں میں اخوان المسلمون کے حامیوں اور پولیس کے درمیان جھڑپوں اور تشدد کے واقعات میں گیارہ افراد ہلاک اور اٹھائیس زخمی ہوگئے تھے۔مصر کے قریباً پانچ کروڑ بیس لاکھ ووٹرز ریفرینڈم میں اپنا حق رائے دہی استعمال کرنے کے اہل تھے۔