.

عراقی فورسز کی صوبہ الانبار میں کارروائی،57 جنگجو ہلاک

بغداد میں بم دھماکوں میں 16 افراد مارے گئے،4 تشدد زدہ لاشیں برآمد

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عراقی فوج اور اس کے اتحادی مسلح قبائلیوں نے مغربی صوبہ الانبار میں جھڑپوں کے دوران القاعدہ سے وابستہ ستاون اسلامی جنگجوؤں کو ہلاک کردیا ہے۔

عراق کی وزارت دفاع نے سوموار کو جاری کردہ ایک بیان میں کہا ہے کہ ہلاک شدگان میں سے زیادہ تر صوبائی دارالحکومت رمادی کے نواح میں مارے گئے ہیں لیکن بیان میں مزید کوئی تفصیل نہیں بتائی گئی۔وزارت دفاع کے اس دعوے کی آزاد ذرائع سے تصدیق ممکن نہیں۔

القاعدہ سے وابستہ تنظیم دولت اسلامی عراق وشام (داعش) نے دسمبر کے آخر سے صوبے کے دارالحکومت رمادی اور فلوجہ میں مکمل کنٹرول حاصل کر رکھا ہے۔عراقی فورسز مقامی قبائل کی مدد سے ان شہروں کا کنٹرول واپس لینے کی کوشش کررہی ہیں اور ان کے درمیان آئے دن خونریز جھڑپوں کی اطلاعات سامنے آتی رہتی ہیں۔

درایں اثناء دارالحکومت بغداد میں پے درپے بم حملوں اور کار بم دھماکوں میں سولہ افراد ہلاک ہوگئے ہیں۔ان میں سے آٹھ افراد شہر کے علاقوں بلدیات اور الحریۃ میں بم دھماکوں میں ہلاک ہوئے ہیں جبکہ شہر کے ایک مغربی علاقے سے تشدد زدہ چار لاشیں برآمد ہوئی ہیں۔ان میں ایک عورت کی لاش بھی شامل ہے۔ان افراد کو سر میں گولی مار کر قتل کیا گیا تھا۔