.

قرضاوی کے بیان پر امارات میں قطری سفیر کی دفترخارجہ طلبی

احتجاج بلا جواز ہے: دوحہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

خلیجی ریاست قطر کے ممتازعالم دین علامہ یوسف القرضاوی کے ایک متنازعہ بیان پر متحدہ عرب امارات میں متعین قطری سفیر کو دفتر خارجہ طلب کر کے سخت احتجاج ریکارڈ کرایا گیا ہے۔

دبئی سے "العربیہ" کے نامہ نگار کے مراسلے کے مطابق ڈاکٹر یوسف القرضاوی کے ایک متنازعہ بیان پر "یو اے ای" نے سخت برہمی کا اظہار کرتے ہوئے ابوظہبی میں متعین قطری سفیر فارس النعیمی کو دفتر خارجہ طلب کیا اور ایک احتجاجی یادداشت ان کے حوالے کی گئی۔

نامہ نگار کے مطابق قطری عالم دین نے حال ہی میں اپنے ایک جمعہ کے خطبہ میں متحدہ عرب امارات کی پالیسیوں پر کڑی تنقید کی تھی، جس کے بعد دونوں ملکوں کے درمیان ایک دوسرے کے خلاف تلخ جملوں کا تبادلہ ہوا تھا۔ خلیجی ریاستیں اپنے گروپ میں شامل قطر پر اخوان المسلمون کے حامیوں کی پشت پناہی کا الزام عائد کرتی رہی ہیں جس کے باعث دوحہ اور دوسرے خلیجی ممالک میں تناؤ پیدا ہوتا رہتا ہے۔

ادھر قطری وزیر خارجہ خالد العطیہ نے اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ علامہ یوسف القرضاوی قطری محکمہ خارجہ کے نمائندہ نہیں ہیں کہ ان کے بیانات کو اتنی سنجیدگی سے لیا جائے۔ وہ ایک عالم دین ہیں اور سرکاری اور نجی ٹیلی ویژن چینلوں سے اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہیں۔ متحدہ عرب امارات اور دوسرے ملکوں کے احتجاج بلا جواز ہیں۔