نئے گروپ سپاہ مصر نے دھماکوں کی ذمہ داری قبول کر لی

جرائم پیشہ حکام کے خلاف کارروائیاں جاری رہیں گی: سپاہ مصر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

ایک نئے سامنے آنے والے عسکری گروپ مصری دارالحکومت قاہرہ کے مضافاتی شہر جیزہ میں پولیس چیک پوائنٹ پر کیے گئے دو ہلکے بم دھماکوں کی ذمہ داری قبول کر لی ہے۔ یہ دھماکے جمعہ کے روز جڑواں شہر میں ہوئے، جس کے نتیجے میں چھ پولیس افسر زخمی ہو گئے تھے۔

ذمہ داری قبول کرنے والے گروپ کا نام سپاہ مصر کے طور پر سامنے آیا ہے۔ اس عسکریت پسند گروپ نے اپنے جاری کیے گئے بیان میں کہا ہے کہ '' سپاہی جرائم پیشہ حکام کے قلب تک پہنچے تاکہ ایک پیغام دیا جا سکے کہ جرائم پیشہ حکام اب محفوظ نہیں ہیں۔''

سپاہ مصر جس کا عربی نام اجناد مصر ہے کے بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ وہ اپنے اس نوعیت کے حملے جاری رکھیں گے۔ جن کا ہدف پولیس اہلکار ہوں گے۔ بیان میں پولیس اہلکاروں سے کہا گیا ہے کہ وہ اپنے گناہوں سے توبہ کریں اور آئندہ کیلیے ایسی کارروائیوں کا حصہ نہ بنیں۔

تاہم ابھی یہ کہنا مشکل ہے کہ یہ بیان وقعی ایسے کسی نئے عسکری گروپ نے جاری کیا ہے یا نہیں مشکل ہے کیونکہ فی الحال اس گروپ کا نام نیا نیا سامنے آیا ہے ۔ واضح رہے پچھلے ہفتے بھی اس گروپ نے اسی نوعیت کی کارروائیوں کی ذمہ داری قبول کی تھی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں