.

بشار رجیم کی سنجیدگی بڑھانے کیلیے روس کوشش کرے: امریکا

شامی اپوزیشن مذاکرات میں بشار رجیم سے زیادہ سنجیدہ ہے: وینڈی شرمین

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سینئیر امریکی سفارتی ذمہ دار کا کہنا ہے کہ روس سے کہا جا رہا ہے کہ بشار الاسد کی زیر قیادت شامی رجیم پر دباو ڈالیے تا کہ وہ جنیوا ٹو کے سلسلے میں مذاکرات میں زیادہ سرگرمی دکھائے اور شا م میں جاری خانہ جنگی کے خاتمے میں مدد مل سکے۔ یہ بات امریکی انڈر سیکرٹری وینڈی شرمین نے '' العربیہ '' کی سینیئیر نمائندہ ریما مکتبی کو انٹرویو دیتے ہوئے کہی ہے۔

وینڈی شرمین نے کہا ''شامی رجیم کو شام کی متحدہ اپوزیشن کی طرح جنیوا ٹو کے حوالے سے ہونے والے مذاکرات کو زیادہ سنجیدگی سے لینا چاہیے۔ ''

انہوں نے مزید کہا '' ہم روس پر زور دیتے ہیں کہ وہ شامی رجیم کے ساتھ زیادہ توانا انداز میں رابطے میں رہتے ہوئے رجیم کو مذاکرات کیلیے زیادہ سنجیدگی پر مائل کرے۔''

وینڈی شرمین کا کہنا تھا امریکا اور روس دونوں کی ذمہ داری ہے کہ متحارب فریقین کو تعمیری بات چیت کیلیے تیار کریں۔ انہوں نے کہا '' ہم سمجھتے ہیں کہ شامی اپوزیشن مذاکرات میں زیادہ سرگرم ہے جبکہ شامی رجیم نہیں ہے۔''

امریکی سفارتی ذمہ دار نے کہا '' مذاکرات ناکام نہیں ہوئے ہیں، لیکن مشکل مراحل آ سکتے ہیں۔'' ایسے چیلنجوں سے نمٹنے کیلیے امریکا سخت محنت کر رہا ہے۔

انہوں نے کہا صدر اوباما نے ہمیں شام کے عوام کی بہتری کے ہر ممکنہ راستے کو اختیار کرنے کی ہدایت کر رکھی ہے اور ہم مسلسل اس حوالے سے کام کر رہے ہیں۔''