.

مصر:سیاحوں کی بس میں بم دھماکا،5 افراد ہلاک

جنوبی کوریا سے تعلق رکھنے والے چار سیاحوں کی ہلاکت کی تصدیق

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مصر کے اسرائیل کی سرحد کے نزدیک واقع علاقے جزیرہ نما سیناء میں سیاحوں کی ایک بس میں بم دھماکے کے نتیجے میں پانچ افراد ہلاک اور بیس سے زیادہ زخمی ہوگئے ہیں۔

مصری فوج کے ایک ذریعے نے اتوار کو بم دھماکے میں جنوبی کوریا سے تعلق رکھنے والے چار سیاحوں اور ایک مصری ڈرائیور کی ہلاکت کی تصدیق کی ہے۔فوری طور پر دھماکے کا سبب معلوم نہیں ہوسکا۔سکیورٹی ذرائع کا کہنا ہے کہ بم سڑک پر نصب کیا گیا تھا اور اس کو ریموٹ کنٹرول کے ذریعے اڑایا گیا ہے۔

حکام کے مطابق بس میں کل تینتیس مسافر سوار تھے اور وہ قریباً تمام زخمی ہوگئے ہیں۔ان میں سے بعض مصر کے اسپتالوں میں زیر علاج ہیں اور بعض کو اسرائیل کے ساحلی شہر ایلات میں منتقل کیا گیا ہے۔

اسرائیلی پولیس کے ایک ترجمان نے کہا ہے کہ دھماکے کی آواز طابا بارڈر کراسنگ سے دوسری جانب مصری علاقے میں سنی گئی ہے۔ اسرائیلی ائیرپورٹ اتھارٹی نے مصری علاقے میں اس بم دھماکے کے بعد طابا سرحدی گذرگاہ کو بند کردیا ہے۔

واضح رہے کہ جزیرہ نما سیناء کے شمالی علاقے میں 3جولائی 2013ء کو مسلح افواج کے ہاتھوں مصر کے منتخب صدر ڈاکٹر محمد مرسی کی برطرفی کے بعد سے بد امنی کا دور دورہ ہے اور جنگجو گروپ سرکاری سکیورٹی فورسز،عام شہریوں اور غیر ملکی سیاحوں پر حملے کررہے ہیں۔

القاعدہ سے متاثر انصار بیت المقدس نامی جنگجو تنظیم نے ان میں سے بیشتر بم حملوں کی ذمے داری قبول کی ہے۔اسی تنظیم نے دسمبر میں مصر کے شہر منصورہ میں پولیس کے ہیڈکوارٹرز پر بم حملے کی ذمے داری قبول کی تھی۔مصری حکومت نے اسی حملے کو جواز بنا کر ملک کی سب سے بڑی مذہبی وسیاسی جماعت اخوان المسلمون کو دہشت گرد قرار دے دیا تھا۔