.

قاہرہ:سعد حریری کی فیلڈ مارشل عبدالفتاح السیسی سے ملاقات

لبنان کی مجموعی صورت حال اور بیرونی مداخلت کے حوالے سے تبادلہ خیال

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

لبنان کے سابق وزیراعظم سعد حریری مصر کی مسلح افواج کے سربراہ فیلڈ مارشل عبدالفتاح السیسی کے ساتھ ملاقات کے لیے قاہرہ میں ہیں۔وہ منگل کو دوروزہ دورے پر مصری دارالحکومت پہنچے تھے۔

مصری اخبار اہرام آن لائن کی رپورٹ کے مطابق لبنان کی مستقبل پارٹی کے سربراہ فیلڈ مارشل سیسی کے ساتھ لبنان کی مجموعی صورت حال اور اس کے داخلی امور میں بیرونی مداخلت کے حوالے سے تبادلہ خیال کریں گے۔وہ اپنے وفد کے ہمراہ مصر کے عبوری صدر عدلی منصور اور وزیرخارجہ نبیل فہمی سے بھی ملاقات کرنے والے تھے۔

سعد حریری کے دفتر کی جانب سے جاری کردہ بیان کے مطابق لبنانی وفد میں ارکان پارلیمان سمیر جسر اور جمال جراح،سابق ارکان باسم سبعہ اور غطاس خورے ،سابق لبنانی وزیر اعظم کے مشیر ڈاکٹر رضوان السید اور نادر حریری شامل ہیں۔ان کا مصر میں 2011ء میں برپا شدہ انقلاب 25 جنوری کے بعد یہ پہلا دورہ ہے۔

واضح رہے کہ لبنان میں حالیہ مہینوں کے دوران متعدد خودکش بم حملے اور کار بم دھماکے ہوئے ہیں۔ان میں شیعہ ملیشیا حزب اللہ کے مضبوط مراکز کو نشانہ بنایا گیا ہے اور یہ حملے حزب اللہ کی شام کی خانہ جنگی میں مداخلت اور صدر بشارالاسد کے دفاع میں باغیوں کے ساتھ لڑائی میں شراکت کے ردعمل میں کیے گئے ہیں۔

لبنان میں بم دھماکوں کے علاوہ اہل تشیع اور اہل سنت کے درمیان بھی کشیدگی جاری ہے اور اس کے ملکی سیاست پر بھی اثرات مرتب ہورہے ہیں۔15 فروری کو قریباً ایک سال کے تعطل کے بعد ملک کی نئی کابینہ تشکیل پائی ہے۔

سعد حریری 2011ء میں اپنی حکومت کے خاتمے کے بعد سے سعودی عرب اور فرانس میں رہ رہے ہیں۔انھوں نے اگلے روز اس سال پارلیمانی انتخابات کے انعقاد سے قبل وطن لوٹنے کا اعلان کیا تھا اور کہا تھا کہ وہ ملک کی بہتری کے لیے اپنے مخالفین کے ساتھ مل کر کام کرنے کو تیار ہیں۔