فیلڈ مارشل سیسی فوجی سپریم کونسل کے سربراہ بھی ہوگئے

مصر کی تاریخ میں پہلی مرتبہ آرمی چیف کوکونسل کا سربراہ بنانے کا فرمان جاری

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

مصر کے عبوری صدر عدلی منصور نے مسلح افواج کی سپریم کونسل کی تشکیل نو کے لیے ایک نیا فرمان جاری کیا ہے جس کے تحت آرمی چیف فیلڈ مارشل عبدالفتاح السیسی کو کونسل کا سربراہ بنا دیا گیا ہے۔

مصر کی تاریخ میں یہ پہلا موقع ہے کہ آرمی چیف کو فوجی کونسل کا بھی سربراہ بنا دیا گیا ہے حالانکہ مصری آئین کے تحت ملک کا صدر مسلح افواج کا کمانڈر انچیف ہے اور وہی سپریم کونسل کا سربراہ ہوتا ہے۔

صدارتی فرمان کے تحت مسلح افواج کی سپریم کونسل کے ارکان کی تعداد میں بھی اضافہ اور اس کی ہیئت ترکیبی میں ردوبدل کیا گیا ہے۔عبوری صدر عدلی منصور نے چند ہفتے قبل آرمی چیف عبدالفتاح السیسی کو جنرل کے عہدے سے ترقی دے کر فیلڈ مارشل بنا دیا تھا اور اب فوج کے مزید اختیارات ان کی ذات میں مرتکز کردیے ہیں۔

اب وہ بیک وقت مصر کے وزیردفاع ہیں،آرمی چیف ہیں اور مسلح افواج کی سپریم کونسل کے سربراہ بھی ہوگئے ہیں۔وہ 3 جولائی 2013ء کو مصر کی تاریخ میں جمہوری طور پر پہلے منتخب صدر ڈاکٹر محمد مرسی کو برطرف کرنے کے بعد سے خود کو ملک کے نجات دہندہ کے طور پر پیش کررہے ہیں اور انھیں ملک میں ایک مرتبہ پھر مطلق العنان حکمرانی کے خواہاں مصریوں کی حمایت حاصل ہے جبکہ جمہوریت نواز ان کی مخالفت کررہے ہیں۔

فیلڈ مارشل سیسی کے بارے میں اب یہ کہا جارہا ہے کہ وہ آیندہ صدارتی انتخاب لڑنے کے لیے وزیردفاع کا منصب چھوڑ دیں گے۔مصر کے سرکاری روزنامے الاہرام نے عرب لیگ کے سابق سیکریٹری جنرل عمروموسیٰ کے حوالے سے اپنی جمعرات کی اشاعت میں بتایا ہے کہ سیسی آیندہ دس روز میں وزیر دفاع کے عہدے سے سبکدوشی اور صدارتی انتخاب لڑنے کا اعلان کردیں گے۔

ان کے بارے میں بدھ کو یہ اطلاع سامنے آئی تھی کہ وہ نامزد وزیراعظم ابراہیم محلب کی نئی حکومت میں بھی بدستور وزیردفاع کے منصب پر فائز رہیں گے۔مصر کے ایک سرکاری ذریعے کے مطابق ''وہ انتخابی قوانین سے متعلق تمام ایشوز طے ہونے تک اپنے عہدے (وزیردفاع) پر کام کرتے رہیں گے''۔عبدالفتاح السیسی نے صدارتی انتخاب لڑا تو ان کی کامیابی یقینی ہے۔تاہم انھیں اس سے قبل وزیردفاع کا منصب چھوڑنا ہوگا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں