.

غزہ سرحد کے قریب اسرائیلی فائرنگ سے خاتون جاں بحق

بزرگ خاتون کا ذہنی توازن ٹھیک نہیں تھا: مقامی ذرائع

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

فلسطین سے موصولہ اطلاعات کے مطابق جنوبی غزہ کی پٹی میں خانیونس کے قریب اسرائیلی فوج کی فائرنگ سے اٹھاون سالہ فلسطینی خاتون آمنہ عطیہ قدیح جاں بحق ہو گئیں۔ ہسپتال ذرائع کے مطابق جاں بحق ہونے والی عطیہ قدیح ذہنی مریضہ تھیں۔

وزارت صحت کے ترجمان ڈاکٹر اشرف القدرہ نے بتایا کہ اسرائیلی فائرنگ کا نشانہ بننے والی آمنہ عطیہ کا جسد خاکی خان یونس میں قائم ناصر ہسپتال منتقل کر دیا گیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق آمنہ قدیح کو گذشتہ شب اسرائیلی فوجیوں نے اس وقت گولی کا نشانہ بنایا جب وہ غزہ کی پٹی میں اسرائیلی سرحدی باڑ کے انتہائی قریب آئیں۔ اطلاع ملنے پر ایمبولنس سروسسز نے فائرنگ سے زخمی ہونے والی خاتون تک پہنچنے کی کوشش کی لیکن رات کی تاریکی اور اسرائیلی سرحدی باڑ قریب ہونے کی وجہ سے وہ زخمی خاتون کو 'ریسکیو' کرنے میں ناکام رہے۔ رات بھر خون بہہ جانے کی وجہ سے آمنہ قدیح زندگی کی بازی ہار گئیں۔

مقامی ذرائع نے بتایا کہ بزرگ خاتون نفسیاتی مسائل کا شکار تھیں، انہیں سرحدی باڑ کے قریب دیکھ کر اسرائیلی فوجیوں کے کسی وارننگ کے بغیر اس پر براہ راست فائرنگ کر دی۔ فائرنگ سے زخمی ہونے کے بعد انہیں فوری طبی امداد کا نہ ملنا ان کی موت کا باعث بنا۔