قذافی کا بیٹا سعدی لیبیا کے حوالے، پولیس نے ٹنڈ کردی

کرپشن اور زمینوں پر قبضے کا ملزم پڑوسی ملک نیجر بھاگ گیا تھا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

نیجر نے لبییا کے مقتول آمر معمر قذافی کے تیسرے بیٹے السعدی قذافی کو لیبی حکام کے حوالے کر دیا ہے۔ لیبیا کے حکام نے اس اقدام پر نیجر حکومت کا اس معاملے میں تعاون کرنے پر شکریہ ادا کیا ہے۔ حکام کا کہنا ہے کہ ملزم کے ساتھ انصاف بین الاقوامی معیار کے مطابق سلوک کیا جائے گا۔

السعدی قذافی کے حوالے سے ''العربیہ '' کے ذریعے سامنے آنے والی تصویر میں دکھایا گیا ہے کہ اس نے نیلا ٹریک سوٹ پہن رکھا ہے اور اس کے بال کاٹے جا رہے ہیں۔

قذافی کے اس بیٹے پر کرپشن اور غیر قانونی طور پر زمینوں پر قبضے کے الزامات ہیں۔ چالیس سالہ سعدی قذافی 2011ء میں اپنے والد کے اقتدار کے خاتمے پر پڑوسی ملک نیجر بھاگ گیا تھا۔

اس پر اقوام متحدہ کی طرف سے سفر کرنے پر پابندی ہے۔ اس کے بھائی سیف الاسلام قذافی کے خلاف لیبیا ہی میں مقدمات چلائے جارہے ہیں جبکہ خاندان کے دیگر افراد اومان میں جلاوطنی کاٹ رہے ہیں۔ السعدی قذافی کو اس کو پلے بوائے کے سے انداز کے حوالے سے جانا جاتا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں